کرونا وائرس، افغان مہاجرین کی پاکستان سے وطن واپسی معطل کر دی گئی

کرونا وائرس، افغان مہاجرین کی پاکستان سے وطن واپسی معطل کر دی گئی

  



اسلام آباد(شِنہوا)کرونا وائرس کی وجہ سے افغانستان کے ساتھ عارضی سرحد بند ہونے کے بعد افغان مہاجرین کی پاکستان سے رضاکارانہ واپسی معطل کر دی گئی ہے۔یہ بات اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) نے منگل کے روز کہی۔یو این مہاجرین ایجنسی کے مطابق رضاکارانہ وطن واپسی کا منصوبہ تین ماہ کے موسم سرما کے وقفے کے بعد 2 مارچ کو شروع کیا گیا تھا،رواں ماہ مجموعی طور پر 28 افراد افغانستان واپس گئے۔یو این مہاجرین ایجنسی نے کہا کہ پاکستان 14 لاکھ سے زائد ایسے افغان مہاجرین کی میزبانی کر رہا ہے جن کے پاس رجسٹریشن کا ثبوت ہے، اور 2002 کے بعد سے یو این ایچ سی آر کے مدد سے رضاکارانہ وطن واپسی آپریشن کے تحت تقریبا 44لاکھ افغان مہاجرین افغانستان واپس گئے ہیں۔پاکستان نے ملک میں کرونا وائرس کا پھیلا روکنے کیلئے اقدامات تیز کرتے ہوئے شمال مغربی خیبر پختونخوا میں طور خم اور جنوب مغربی بلوچستان میں چمن کے سرحدی مقامات بند کر دیئے ہیں۔ یو این ایچ سی آر کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ افغانستان کے ساتھ طورخم اور چمن کی سرحدی گزگاہوں کی بندش کے بعد پاکستان سے رجسٹرڈ افغان مہاجرین کی وطن واپسی معطل کر دی گئی ہے، اس کی وجہ حکومت کی جانب سے کرونا وائرس کا پھیلاؤ کم کرنے کیلئے کئے گیئے احتیاطی اقدامات ہیں۔حکام کے مطابق پاکستان میں پیر کے روز تک کرونا وائرس کے مجموعی تصدیق شدہ کیسز 100 سے تجاوز کر چکے تھے۔

افغان مہاجرین

مزید : صفحہ اول