پیرا گو ن کیس، خواجہ برادران کی ضمانتیں منظور، مسلم لیگ (ن) کا اظہار تشکر

    پیرا گو ن کیس، خواجہ برادران کی ضمانتیں منظور، مسلم لیگ (ن) کا اظہار تشکر

  



اسلام آباد/لندن (مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) سپریم کورٹ نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کیس میں خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت منظور کرلی۔ عدالت نے 30، 30 لاکھ کے 2 ضمانتی مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔ جسٹس مقبول باقر کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کیس کی سماعت کی۔ جسٹس مقبول باقر نے کہا ہے کہ نیب کے پاس ضمانت خارج کرنے کی کوئی بنیاد نہیں، نیب نے شاملات کی زمین کے پلان میں خلاف ورزی کا الزام نہیں لگایا۔مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت منظور ہونے پر اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیڑھ سال سے زیادہ عرصے تک قید ناحق گزارنے والے بیگناہ خواجہ برادران کو انصاف ملنے پر اللہ تعالی کا شکر ادا کرتے ہیں، خواجہ برادران کی ضمانت سے انصاف کا بول بالا ہوا نیب کو خود سوچنا ہو گا کہ اس کے پلے کیا رہ گیا؟۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ کیا خواجہ برادران کی جیل والی زندگی نیب واپس دے سکتا ہے۔شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ چیئرمین نیب استعفیٰ دے کر گھر جائیں۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں سیاستدان کو توڑنے دبانے کیلئے نیب استعمال ہو رہا ہے تاہم وقت ہے کہ یہ سلسلہ ختم ہونا چاہیے۔خواجہ آصف نے کہاکہ نہیں چاہتے ایسا قانون رہے کہ آ نے والے دور میں نشانہ بنانے کیلئے استعمال ہو۔ خواجہ آصف نے کہاکہ ایک ایک کر کے ہماری ضمانتیں سیاسی انتقام کا ثبوت ہیں۔ خواجہ آصف نے کہاکہ چین سے طالبعلموں کو نہیں لایا گیا لیکن زلفی بخاری نے کرونا کے سیلاب کو لانے کی اجازت دی۔ احسن اقبال نے کہاکہ نیب عمران خان کے مخالفین کی آواز بند کرنے کیلئے استعمال ہو رہا ہے،نیب ضمانت کی درخواست مسترد کرنے کی ایک وجہ بھی بتا نہیں سکی۔احسن اقبال نے کہاکہ نیب صرف عمران خان کی مرضی پر چل کر فسطائیت نازل کر رہا ہے۔

خواجہ برادران

مزید : صفحہ اول