آسٹریلین کرکٹرز نے آئی پی ایل ملتوی ہونے کے باوجود ایسی بات پر غور شروع کر دیا کہ بھارتیوں کی پریشانی کی حد نہ رہے

آسٹریلین کرکٹرز نے آئی پی ایل ملتوی ہونے کے باوجود ایسی بات پر غور شروع کر ...
آسٹریلین کرکٹرز نے آئی پی ایل ملتوی ہونے کے باوجود ایسی بات پر غور شروع کر دیا کہ بھارتیوں کی پریشانی کی حد نہ رہے

  



سڈنی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارت نے کورونا وائرس کے باعث انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) منسوخ کر دی ہے لیکن اس کے باوجود آسٹریلین کرکٹرز نے فرنچائزز سے اپنے معاہدے ختم کرنے پر غور شروع کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت سمیت پوری دنیا میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد آسٹریلوی کھلاڑیوں کی بھارت آمد پر سوالیہ نشان لگ چکاہے جس کے بعد بھارتی بورڈ نے 15 اپریل تک آئی پی ایل مقابلوں کو موخر کرنے کا اعلان بھی کیا تاہم ایسا لگتا ہے کہ رواں سال ٹورنامنٹ کا انعقاد ممکن نہیں ہو سکے گا اور اگر آئی پی ایل منعقد کی بھی گئی تو بہت سے غیر ملکی کھلاڑی اس میں شریک نہیں ہوں گے۔

آسٹریلین کھلاڑی پیٹ کومنز، سٹیو سمتھ، ڈیوڈ وارنر، گلین میکس ویل سمیت 17 آسٹریلین کرکٹرز نے آئی پی ایل کیساتھ معاہدے کر رکھے ہیں تاہم آسٹریلین میڈیا کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث کرکٹرز نے اپنے معاہدے ختم کرنے پر غور شروع کر دیا ہے۔

دوسری جانب کرکٹ آسٹریلیا کے چیف ایگزیکٹو کیون روبرٹس کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں نے انفرادی حیثیت میں آئی پی ایل معاہدے کر رکھے ہیں، ہم انہیں براہ راست کوئی ہدایات نہیں دے سکتے لیکن موجودہ صورت حال میں مشورہ دے سکتے ہیں، آئی پی ایل میں کھیلنے یا نہ کھیلنے کافیصلہ خود کرکٹرز نے کرنا ہے۔

مزید : کھیل