پاک ، بھارت میچز کے بغیر ٹیسٹ چیمپین شپ کیسی ہے؟ وقار یونس نے ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی تو کیا بھارتی شائقین کرکٹ بھی ان سے اتفاق کرنے پر مجبور ہو جائیں

پاک ، بھارت میچز کے بغیر ٹیسٹ چیمپین شپ کیسی ہے؟ وقار یونس نے ایسی بات کہہ دی ...
پاک ، بھارت میچز کے بغیر ٹیسٹ چیمپین شپ کیسی ہے؟ وقار یونس نے ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی تو کیا بھارتی شائقین کرکٹ بھی ان سے اتفاق کرنے پر مجبور ہو جائیں

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق فاسٹ باﺅلر وقار یونس نے پاک ، بھارت میچز کے بغیر ٹیسٹ چیمپین شپ کا رنگ پھیکا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کو اس ضمن میں کردار ادا کرنا چاہئے کیونکہ اس کے بغیر ٹیسٹ چیمپین شپ معقول بات نہیں لگتی۔

تفصیلات کے مطابق وقار یونس نے کہا کہ آئی سی سی ورلڈ ٹیسٹ چیمپین شپ میں 9ٹاپ ٹیمیں شریک ہیں اور ہر ملک کو دیگر کے ساتھ 6 باہمی سیریز کھیلنا ہوں گی جبکہ حریفوں کا فیصلہ بورڈ کو اتفاق رائے سے کرنا ہے اور سیاسی تعلقات کشیدہ ہونے کی وجہ سے بھارتی ٹیم کا پاکستان کے ساتھ کوئی میچ شیڈول نہیں ہے۔ پاک، بھارت سیریز کے حوالے سے حکومتی سطح پر مشکل صورتحال ہے لیکن میرے خیال میں آئی سی سی کو اس ضمن میں اپنا کردار ادا کرنا چاہئے کیونکہ پاک بھارت مقابلوں کے بغیر ٹیسٹ چیمپئن شپ معقول بات نہیں لگتا۔ پاک، بھارت میچز کے حوالے سے ماضی میں بھی یہی صورتحال رہی،اسی لئے روایتی حریف کیخلاف ڈیبیو کا موقع ملنا میرے لئے یادگار تھا۔

ایک سوال پر وقار یونس نے کہا کہ بطور باﺅلنگ کوچ پاکستانی ون ڈے اور ٹی 20 کرکٹ میں تجربات میری پالیسی کا حصہ ہیں، جو باﺅلرز فارم میں ہوں ان کو بروقت موقع ملنا چاہیے،اس کا یہ مطلب نہیں کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں کارکردگی دکھانے والوں کو نظر انداز کردیا جائے، محمد عباس اور عمران خان اس کی مثال ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارت نے فاسٹ باﺅلرز کی تیاری کیلئے سخت محنت کی ہے جس کے باعث اب وہاں سے 140کلومیٹر سپیڈ سے گیند کرنے والے پیسرز تواتر سے سامنے آ رہے ہیں۔ جسپریت بمرا، محمد شامی اورایشانت شرما بھارت کو عروج کی جانب گامزن کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں،یہی وجہ ہے کہ ٹیم ٹیسٹ اور دیگر فارمیٹس میں بھی اچھی کارکردگی دکھا رہی ہے۔

مزید : کھیل