پیرا میڈیکل کا سروس سٹرکچر تسلیم

پیرا میڈیکل کا سروس سٹرکچر تسلیم

                                    لاہور(جاوید اقبال،حنیف خان)صوبائی دارالحکومت اور دیگر شہروں میں واقع ہسپتالوںکے پیرا میڈیکل سٹاف کے سروس سٹرکچر کے مطالبات تسلیم کر لئے گئے ہیںاور سروس سٹرکچر پر جاری ہونیوالے رولز کا اطلاق 2012 ءسے قبل بھرتی ہونیوالی ملازمین پر نہیں ہوگا، 2012 ءسے قبل بھرتی ہونیوالے ملازمین کو ایک سال کے ٹیکنیکل ڈپلومہ اور ایف ایس سی کی ڈگری سے مستنثیٰ قرار دے دیا گیا ہے جس کی منظوری گزشتہ روز سیکرٹری صحت ڈاکٹر اعجاز منیر کی زیر صدارت ہونیوالے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں دی گئی، جس کا نوٹیفکیشن رواں ماہ کے آخر تک جاری کر دیا جائے گا، واضح رہے کہ سرکاری ہسپتالوں کے گریڈ 5 سے 16 تک کے پیرا میڈیکل سٹاف کے ملازمین کا سروسر سٹرکچر نومبر 2011 ءمیں چار درجاتی فارمولے کے تحت جاری کیا گیا تھا جس پر عملدرآمد نہ ہونے کیخلاف پیرا میڈیکل سٹاف ایسوسی ایشن کی تمام ٹیم سراپا احتجاج تھیں اور آئے روز ہپپتال بند کر رہی تھیں، تین روز قبل ہونیوالا احتجاج رنگ لے آیا جس کے بعد سیکرٹری صحت ڈاکٹر اعجاز منیر کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دی گئی، کمیٹی نے سروس رولز میں گریڈ 5 سے 16 تک کے پیرا میڈیکل سٹاف کی ترقیوں کی راہ میں رکاوٹ بننے والی شق کو ختم کر دیا، اس شق کے مطابق سروس رولز میں ترقی پانے کیلئے متعلقہ سپیشلٹی میں ایک سال کا ڈپلومہ کورس اور ایف ایس ای کی ڈگری ضروری قرار دی گئی تھی جس پر کسی بھی سپیشلٹی کا پیرا میڈیکل سٹاف کا کوئی ممبر پورا نہیں اترتا تھا جس وجہ سے سروس سٹرکچر کے نوٹیفکیشن پر عملدرآمد نہیں ہو رہا تھا، گزشتہ روز ہونیوالے اجلاس میں 2012 ءسے قبل بھرتی ہونیوالے پیرا میڈیکل سٹاف جو گریڈ 5 سے 16 تک کے ملازمین ہیں کو اس سے مستثنیٰ قرار دے دیا گیا یہ شق 2012 ءسے قبل بھرتی ہونیوالے پیرا میڈیکل سٹاف پر لاگو نہیں ہوگی اور وہ نئے سروس سٹرکچر کے چار درجاتی فارمولا کے مطابق ترقیاں پا لیں گے جبکہ 2012 ءکے بعد بھرتی ہونیوالے سٹاف پر اس شق کا اطلاق ہوگا، سیکرٹری صحت نے اس کی باقاعدہ منظوری دے دی ہے اور باقاعدہ نوٹیفکیشن آئندہ چند روز میں جاری ہو جائے گا، اس طرح گزشتہ چار سال سے ہسپتالوں کو اکھاڑا بنانے والے پیر امیڈیکل سٹاف کے مطالبات منظور ہو جائیں گے، اس پر سیکرٹری صحت ڈاکٹر اعجاز منیر نے ”پاکستان“ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے متنازعہ شق ختم کر دی ہے، اگر سروس سٹرکچر کے رولز جو 2011 ءمیں جاری ہوئے تھے اگر اس پر عمل کرتے تو کوئی رکن بھی اس پر پورا نہ اترتا، اس شق کا اطلاق ان لوگوں پر ہوگا جو 2012 ءکے بعد بھرتی ہوئے ہیں، اس سے قبل بھرتی ہونیوالے ملازمین کو ان کے گریڈ اور سروس سٹرکچر کے مطابق ترقیاں ملیں گے، اب پیرا میڈیکل سٹاف کا فرض بنتا ہے کہ وہ احتجاجی ریلیوں، دھرنوں اور ہڑتالوں کو ختم کریں اور مریضوں کی خدمت کریں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1