,قطر کی گرمی نے ’فیفا‘کو فیصلہ تبدیل کرنے پر مجبور کردیا

,قطر کی گرمی نے ’فیفا‘کو فیصلہ تبدیل کرنے پر مجبور کردیا
,قطر کی گرمی نے ’فیفا‘کو فیصلہ تبدیل کرنے پر مجبور کردیا

  

پیرس (مانیٹرنگ ڈیسک) جب سے 2022ءکا فٹ بال ورلڈ کپ قطر میں منعقد کئے جانے کا فیصلہ ہوا ہے ہر دوسرے دن اس فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور بالآخر فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا کے صدر سیپ پلاٹر نے بھی تسلیم کرلیا ہے کہ عالمی کپ کی میزبانی قطر کو دینے کا فیصلہ ایک غلطی تھی۔ متعدد بار یہ الزام سامنے آچکا ہے کہ قطر نے رشوت اور سیاسی اثر ورسوخ کو استعمال کرتے ہوئے عالمی کپ کی میزبانی ”خریدی“ ہے، جس کی قطری حکومت نے سختی سے تردید کی ہے۔ فیفا کے صدر کے حالیہ اعتراف نے قطرمخالف حلقوں کو تنقید کا نیا موقع فراہم کردیا ہے۔ تاہم پلاٹر نے وضاحت کی ہے کہ انہوں نے اس فیصلے کو قطر کے گرم موسم کی وجہ سے غلطی قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فیصلہ ہونے سے پہلے ٹیکنیکل کمیٹی نے بتایا تھا کہ قطر گرم موسم کی وجہ سے عالمی کپ کی میزبانی کیلئے موزوں ہیں لیکن پھر بھی کمیٹی نے قطر کے حق میں فیصلہ کردیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ عالمی کپ قطر میں ہی ہوگا لیکن گرمی کی بجائے اسے سرد موسم کے دوران منعقد کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ قطر میں موسم گرما کے دوران درجہ حرارت 50 ڈگری تک پہنچ جاتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر