لاس اینجلس، مارلن منرو کی پراسرار موت کا معمہ حل؟

لاس اینجلس، مارلن منرو کی پراسرار موت کا معمہ حل؟
لاس اینجلس، مارلن منرو کی پراسرار موت کا معمہ حل؟

  

لاس اینجلس (نیوز ڈیسک) امریکہ کی شہرہ آفاق ملکہ حسن اور ہالی ووڈ کی مشہور ترین اداکارہ مارلن منرو اپنی خوبصورتی اور سٹائل کی وجہ سے لاکھوں دلوں کی دھڑکن تھی اور ”خودکشی“ سے اس کی موت نے گزشتہ نصف دہائی سے طرح طرح کی قیاس آرائیوں کو جنم دیا ہے۔ لیکن بالآخر شوبز کی دنیا میںمنفرد مقام رکھنے والے اس حسینہ کی موت کا مسئلہ حل ہوگیا ہے اور امریکہ کے دو معتبر صحافیوں جے مارگولس اور رچرڈ بسکن نے اپنی کتاب ”دامرڈر آف مارلن منرو: کیس کلوزڈ“ میں یہ انکشاف کردیا ہے کہ مارلن نے خودکشی نہیں کی تھی بلکہ سابق امریکی صدر جان ایف کینیڈی کے بھائی کے حکم پر اس کے دل میں زہر کا انجکشن لگا کر اسے موت کے گھاٹ اتارا گیا۔ اس کتاب میں بتایا گیا ہے کہ صدرجان ایف کینیڈی اورمارلن منرو کے درمیان معاشقہ چل رہا تھا لیکن بالآخر صدر نے مارلن سے جان چھڑانے کا فیصلہ کیا اور اپنے بھائی رابرٹ کینیڈی المعروف بوبی کینیڈی کو بھیجا کہ وہ مارلن کو سمجھائے کہ وہ صدر سے کوئی رابطہ نہ کرے اور نہ ہی وائٹ ہاﺅس میں فون کرے۔ رابرٹ کینیڈی جب مارلن کو سمجھانے پہنچا تو خود اس کے سحر میں گرفتار ہوگیا اور دونوں میں معاشقہ شروع ہوگیا۔ لیکن بالآخر اس نے بھی مارلن سے دور ہونے کی کوشش شروع کردی جس پر مارلن سیخ پا ہوگئی اور دونوں بھائیوں کے راز افشاءکرنے کی دھمکی دی۔ مارلن نے بوبی کو بتایا کہ دونوں بھائیوں کے ساتھ معاشقے کی تمام تفصیلات اُس نے ایک چھوٹی سرخ کتاب میں لکھ رکھی تھیں۔ بوبی کے برادرنسبتی اداکار پیٹر لافورڈ نے بتایا کہ امریکی صدر اور ان کے بھائی نے مارلن کو اپنی جنسی ہوس کیلئے فٹ بال بنارکھا تھا، کبھی ایک بھائی کے پاس تو کبھی دوسرے کے پاس۔ مارلن کی دھمکیوں سے خوفزدہ اور برہم ہوکر رابرٹ کینیڈی نے اسے قت کرنے کا فیصلہ کرلیا اور اس مقصد کیلئے مارلن کے ذہنی امراض کے ڈاکٹر رالف گرینسن کو بلایا گیا اور ڈاکٹر رالف نے پینٹو باربی ٹال نامی کمیکل کا انجکشن مارلن کے دل میں لگاکر اسے ہلاک کردیا۔ اس قتل کے عینی شایدین کا کہنا ہے کہ اس نازک اقدام حسینہ کو انتہائی وحشیانہ انداز میں قتل کیا گیا۔ ڈاکٹر رالف نے تقریباً ایک فٹ لمبی سوئی والے انجکشن کو پوری قوت سے مارلن کے جسم میں اتارا اور اس عمل کے دوران مارلن کی ایک پسلی بھی ٹوٹ گئی۔ اس تہلکہ خیز کتاب کے مصنفین کا کہنا ہے کہ انہوں نے مارلن کی موت کا معمہ ہمیشہ ہمیشہ کیلئے حل کردیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر