بھارت سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں پاکستان نریندر مودی کا مینڈیٹ تسلیم کرے ،سابق وزیر خارجہ

بھارت سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں پاکستان نریندر مودی کا مینڈیٹ تسلیم کرے ،سابق ...

                           لاہور(شہزاد ملک) ہم ہمسایہ ملک بھارت سے اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، نریندر مودی کے بھاری اکثریت سے الیکشن جیتنے پر پاکستان کے سابقہ وزراءخارجہ سر دار آصف احمد علی اور میاں خورشید محمود قصوری نے کہا ہے کہ گھبراہٹ والی کوئی بات نہیں ہے پاکستان کو پر اعتماد ہو کر ان سے بات کرنی چاہئے وہ بھارت کی بزنس کمیونٹی کے سر پر منتخب ہوئے ہیں اور اس کمیونٹی نے ان پر بڑی سرمایہ کاری بھی کی ہے وہ پاکستان کے ساتھ خود بہتر تعلقات اور تجارت کا سلسلہ شروع کریں گے ۔” روز نامہ پاکستان“ کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر خارجہ سردار آصف احمد علی نے کہا کہ پہلی بات تو ےہ کہ ہمیں ان کے مینڈیٹ کو تسلیم کر لینا چاہئے دوسری بات ےہ کہ ہمیں کوئی گھبراہٹ نہیں ہونی چاہئے اور پر اعتمادی کے ساتھ بات کر نی چاہئے میری نظر میں فکرو الی کوئی بات نہیں ہے سرحدوں پر بھی کوئی خطرہ نظر نہیں آ رہا ہے اگر دیکھا جائے تو کانگریس کے دور حکومت میں ہمارے ان کے ساتھ تعلقات کوئی اچھے نہیں رہے ہیں لیکن واجپائی اور ایڈوانی پاکستان کا دورہ کر چکے ہیں پاکستان کے وزیراعظم نے انہیں پاکستان کے دورے کی دعوت دیکر ایک اچھا پیغام دیا ہے۔سابق وزیر خارجہ میاں خورشید محمود قصوری نے کہا کہ نریندر مودی بھارت میں ترقی کا نعرہ لیکر منتخب ہوئے ہیں اور انہیں بزنس کمیونٹی نے بھی آگے آنے میں مدددی ہے وہ کبھی بھی کسی بھی ہمسایہ ملک کے ساتھ کوئی ایسی بات نہیں کریں گے کہ جس سے انکے اپنے ملک کے اندر عدم استحکام پیدا ہو میں ےہ سمجھتا ہوں کہ وہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات کے ساتھ پاکستان سے تجارت کریں گے اور اپنی ٹریڈ کو بہتر کرنے کی کوشش کریں گے ۔

مودی

مزید : صفحہ آخر