لاہور پولیس نا کوں پر عوام کو ناکوں چنے چبوانے لگی کوئی بڑا مجرم پکڑنے میں نا کام

لاہور پولیس نا کوں پر عوام کو ناکوں چنے چبوانے لگی کوئی بڑا مجرم پکڑنے میں نا ...

             لا ہو ر (کرائم سیل)لاہور پولیس شہر میں تین سو کے قریب ناکوں پر عوام کو ناکوں چنے چبوانے لگی ،گزشتہ ایک سا ل کے دوران لاہور پولیس ناکوں پر معمولی چور اچکوں کے سوا کسی بھی بڑے مجرم کو پکڑنے میں ناکام رہی۔ناکوں پر عوام کی جیبوں پر نظر رکھنے، ٹریفک پولیس اور ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے اختیارات استعمال کرنے والی لاہور پولیس کے سامنے سے دہشت گرد سلیمانی ٹوپیاں پہن کر گزرنے لگے۔شہر میں داخلی خارجی راستوں کے ساتھ ساتھ شہر کے اندر لگائے جانے والے ناکے پولیس ملازمین کی ناجائز آمدن کا ذریعہ بن گئے۔تفصیلات کے مطابق لاہور پولیس کے طرف سے عوام کی نام نہاد حفاظت اور شہریوں کو چور ڈاکوﺅں اور دہشت گردوں سے بچانے کےلئے لگائے جانے والے تین سو کے قریب ناکے عوام کےلئے ہی وبال جان بن گئے ۔شہر ی چوروںاور ڈاکوﺅں سے زیادہ پولیس ناکوں سے بچنے کی کوشش کرنے لگے۔ناکوں پر موجود پولیس اہلکار مشکوک افراد کی چیکنگ کی بجائے ٹریفک پولیس اور ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے اختیارات استعمال کر کے لوگوں کی جیبیں خالی کرنے لگے ۔شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر لگائے جانے والے ناکوں پرکھڑے پولیس اہلکاروں کے پاس چیکنگ کا کوئی آلہ تک نہیں ہوتا او نہ ہی جدید اسلحہ سے لیس ہوتے ہیں جس پر اہلکار مشکوک افراد کی چیکنگ کی بجائے ناکوں سے چند قدم کے فاصلے پر کھڑے ہو جاتے ہیںاور گزرنے والے شہریوں سے لوٹ مار کے سوا اور کوئی کام نہیں کرتے اور شہریوں کی شناخت کی بجائے ان کے ڈرائیونگ لائسنس اور گاڑیوں کے ٹوکن چیک کرتے نظر آتے ہیںاور ڈرائیونگ لائسنس نہ ہونے کی صورت میں بھی ان سے دیہاڑی لگا کر چھوڑ دیا جاتا ہے جس سے شہریوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے جبکہ پچھلے پانچ سالوں کے دوران ناکوں پر موجود پولیس اہلکار معمولی چو ر اچکوں کے سوا کسی بڑے مجرم یا دہشت گرد کو نہیں پکڑ سکی۔ذرائع کے مطابق پولیس اہلکاروں نے افسران سے اچھے تعلقات کے باعث من پسند ناکوں پر تعیناتی کرا رکھی ہے اور ایسا محسوس ہوتا ہے کے شہر کے اہم ناکے اہلکاروں کو ٹھیکے پر دئے گئے ہیں جس کے باعث اہلکاروں نے ان ناکوں پر اندھیر نگری مچا رکھی ہے۔

مزید : علاقائی