ایران گیس پائپ لائن منصوبہ جلد مکمل کیاجائے: میاں شاہد

ایران گیس پائپ لائن منصوبہ جلد مکمل کیاجائے: میاں شاہد

لاہور )وقائع نگار)یونائیٹڈ انٹرنیشنل گروپ کے چیرمین میاں شاہدنے کہاہے کہ پاکستان اور ایران4 کے مابین پائپ لائن منصوبے پر معاہدے کے بیس برس بعداس سیاست زدہ منصوبہ پر عمل درآمد کا امکان ہے۔اس منصوبہ سے پاکستان اور ایران کے سیاسی اور اقتصادی مفادات وابستہ ہیں مگر امریکہ اس میں رکاوٹ بنا رہا اور پاکستان کو ایران کے بجائے ترکمانستان سے4 گیس لینے پر مجبور کرتا رہا مگر وہ منصوبہ بھی کاغذات اور بیانات تک محدود رہا۔ایران پر عالمی پابندیاں اٹھنے سے پاکستان کا توانائی بحران بھی ختم ہو جائے گا۔ میاں شاہد نے یہ بات ویمن چیمبر کی بانی صدر ثمینہ فاضل سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ پابندیاں اٹھنے کے بعد پائپ لائی کو بھارت اور چین تک توسیع دی جا سکے گی جس سے پاکستان کو راہداری کی مد میں آمدنی ہو گی جبکہ پاکستان ایران سے ایل این جی بھی4 درامدکر سکے گی جسکی قیمت4 بین الاقوامی4 مارکیٹ سے کم ہو گی۔ اس4 سے ایران کا رخ مشرق کی طرف، آمدنی، زوال4 پزیر توانائی4 کی صنعت اور سیاسی اثر رسوخ4 میں اضافہ ہو گا۔ ایران نے تیل کی قیمت میں نو فیصد اضافہ کر دیا ہے جبکہ تین سال میں تیل کی پیداوار 5.7 ملین بیرل یومیہ تک پہنچانے کا ہدف مقرر کیا ہے جس سے اسکے بڑھتے ہوئے اعتماد کا پتہ چلتا ہے جبکہ اسی ضمن میں بھارت نے تین سال میں ایل این جی کی4 درآمد سالانہ بیس لاکھ ٹن سے بڑھا کر 25 لاکھ ٹن کرنے کیلئے ممبئی میں470 ملین ڈالرکی لاگت سے فلوٹنگ ٹرمینل کی تعمیرکا4 فیصلہ کیا ہے ۔ اس موقع پر ثمینہ فاضل نے کہاکہ پاکستان نے یمن تنازعہ میں فریق نہ بن کر اپنی غیر جانبدارانہ پوزیشن کو مضبوط کیا ہے جسے چین سمیت متعدد ممالک نے سراہا ہے۔ اگلے مہینے ایران پر پابندیاں ختم ہونے کا قوی امکان ہے اسلئے پائپ لائن کیلئے بین الاقوامی سرمایہ کاروں سے رابطوں کے علاوہ بجٹ میں رقم رکھنے پر بھی غور کیا جائے۔

مزید : کامرس