پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان ایٹی ڈیل؟ہزاروں امریکی خفیہ ایجنٹ کام پر لگ گئے

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان ایٹی ڈیل؟ہزاروں امریکی خفیہ ایجنٹ کام پر لگ ...
پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان ایٹی ڈیل؟ہزاروں امریکی خفیہ ایجنٹ کام پر لگ گئے

  

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) مغربی میڈیا میں پاکستان کے متعلق جوہری پھیلاﺅ کے الزامات ماضی میں بھی سامنے آتے رہے ہیں اور مستقبل میں بھی یہ سلسلہ تھمتا نظر نہیں آتا۔

مزیدپڑھیں:تاج محل عشقیہ نہیں دینی جذبے سے بنا:رپورٹ

”دی سنڈے ٹائمز“ میں شائع ہونے والی ایک حالیہ رپورٹ میں ایسے ہی الزامات دوبارہ سامنے آئے ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ مغربی طاقتوں اور ایران کے درمیان جوہری معاہدے کے ردعمل کے طور پر سعودی عرب پاکستان سے جوہری ہتھیار خریدنے کا فیصلہ کرچکا ہے، جبکہ سینکڑوں امریکی خفیہ اہلکار ایک خصوصی مشن پر کام شروع کر چکے ہیں جس کا مقصد یہ جاننا ہے کہ کہیں پاکستان کی طرف سے سعودی عرب کو جوہری ہتھیار منتقل تو نہیں ہو چکے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان ایک معاہدہ پہلے ہی موجود تھا اور اب سعودی قیادت نے آگے بڑھنے کا سٹریٹجک فیصلہ کرلیا ہے ۔ ایک سابق امریکی دفاعی اہلکار کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ اگرچہ تاحال جوہری ہتھیاروں کی منتقلی نہیں ہوئی لیکن یہ واضح ہے کہ سعودی جو کہہ رہے ہیں ان کا مطلب وہی ہے اوروہ جو کہہ رہے ہیں کریں گے بھی۔ جب سابق امریکی اہلکار سے پوچھا گیا کہ کیا سعودی عرب ایٹمی طاقت بننے کا فیصلہ کرچکا ہے تو ان کا کہنا تھا کہ یہی سمجھا جائے۔

جریدے ”ٹائمز“ کے مطابق ایک امریکی انٹیلی جنس اہلکار کا تجزیہ بھی یہی ہے اور اسی اہلکار نے انکشاف کیا ہے کہ سی آئی اے کے سینکڑوں اہلکار یہ جاننے کی کوشش میں ہیں کہ کہیں پاکستان سعودی عرب کو جوہری ٹیکنالوجی پہلے ہی منتقل تو نہیں کرچکا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس