تین ملزمان نے 9 ماہ کی حاملہ لڑکی کو قتل کرکے پیٹ سے بچہ نکال لیا

تین ملزمان نے 9 ماہ کی حاملہ لڑکی کو قتل کرکے پیٹ سے بچہ نکال لیا
تین ملزمان نے 9 ماہ کی حاملہ لڑکی کو قتل کرکے پیٹ سے بچہ نکال لیا

  

شکاگو (ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکہ کے شہر شکاگو میں انتہائی دلخراش واقعہ پیش آیا ہے جہاں تین ملزمان نے 9 ماہ کی حاملہ لڑکی کو قتل کرکے اس کے پیٹ سے اس کا بچہ نکال لیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایک فیس بک گروپ میں مدد کی درخواست کرنے والی 19 سالہ حاملہ لڑکی 23 اپریل کو لاپتا ہوئی تھی جس کی لاش مل گئی ہے۔ اوشوا لوپیز نامی یہ لڑکی لاطینو یوتھ ہائی سکول میں زیر تعلیم تھی ، اس نے فیس بک گروپ میں مدد کی درخواست کی تھی تاہم پولیس کوحاملہ لڑکی کی اس خاتون کے گھر کی پچھلی طرف سے لاش ملی ہے جس نے اسے مدد کی آفر کی تھی۔

شکاگو پولیس کے ڈپٹی چیف آف ڈیٹیکٹوز برینڈن ڈینی ہان نے میڈیا کو بتایا کہ لڑکی کو دھاتی تار سے گلا دبا کر قتل کیا گیا اور اس کے پیٹ کو کاٹ کر اس میں سے بچہ نکال لیا گیا۔ بچہ ایک ہسپتال میں انتہائی تشویشناک حالت میں زیر علاج ہے۔

پولیس نے لڑکی کی ہلاکت کے مقدمے میں تین ملزمان کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کیا ہے۔ دو ملزمان کے خلاف قتل کے جرم کی دفعات لگائی گئی ہیں جبکہ تیسرے ملزم کے خلاف جرم میں مدد کی دفعہ لگائی گئی ہے۔ ملزمان میں 46 سالہ خاتون کلاریسا فگیرووا شامل ہے جس نے مقتولہ کو مدد کے بہانے اپنے گھر بلایا ۔ مقدمے میں کلاریسا کی 24 سالہ بیٹی بھی شامل ہے جس نے پولیس کے روبرو قتل میں مدد دینے کا الزام قبول کیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس کو پہلی بار اوشوا لوپیز کی گمشدگی کا سراغ 7 مئی کو ملا جب پولیس کو مقتولہ کے دوستوں نے اس کی مرکزی ملزمہ خاتون کے ساتھ ہونے والی چیٹ کے بارے میں بتایا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مختلف لوگوں کے انٹرویوز کرنے اور ڈی این اے ٹیسٹ کرنے کے بعد پولیس ملزمان تک پہنچی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس