ق لیگ، حکومت اختلافات شدید، طارق بشیر چیمہ وزارت چھوڑ کر گھر روانہ

ق لیگ، حکومت اختلافات شدید، طارق بشیر چیمہ وزارت چھوڑ کر گھر روانہ

  

اسلام آباد (آن لائن) وزیراعظم عمران خان کی طرف سے 48 گھنٹے گزر نے کے باوجود چوہدری برادران کو ان کے خلاف نیب کی کاروائیوں بارے کوئی جواب نہ دینے پر ق لیگ مایوس ہوگئی جبکہ ق لیگ کے وفاقی وزیر برائے ہاؤسنگ و تعمیرات طارق بشیر چیمہ نے غیر اعلانیہ طور پر وزارت میں اپنا کام چھوڑ دیا ہے اور وہ اپنے حلقے بہاولپورواپس چلے گئے ہیں جبکہ طارق بشیر چیمہ سے وزیراعظم کے نمائندہ عون چوہدری کی چھ ملاقاتیں بھی کارآمد ثابت نہیں ہوئی ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ حکومت اور مسلم لیگ ق کی قیادت کے درمیان تلخیاں اور فاصلے اتنے زیادہ بڑھ گئے ہیں کہ طارق بشیر چیمہ نے ہفتہ کو بھاولپور جانے سے پہلے کہاتھا کہ اب وہ تب ہی واپس آئیں گے جب عمران خان ان کے سوالات کا جواب دینگے کہ نیب کو ان کی قیادت کے پیچھے کیوں لگایا گیا اور حکومت نے جب تک اپنی پوزیشن واضح نہ کی وہ واپس نہیں آئیں گے حالانکہ عمران خان ان سے ملاقات کے دوران مسلسل کہتے رہے ہیں کہ چوہدری برادران کے خلاف کیسز کو دوبارہ اوپن کروانے میں ان کا کوئی ہاتھ نہیں مگر ق لیگ یہ ماننے کو تیار نہیں۔ اس ملاقات کے بعد وزیراعظم نے اپنے نمائندہ کے طور پر عون چوہدری کو ان کے پاس بھیجا وہ بھی وضاحت دیتے رہے مگر طارق بشیر چیمہ مطمئن نہ ہوئے۔دوسری جانب عون چوہدری دوبارہ وزیراعظم کیمپ میں شامل ہوگئے ہیں حالانکہ پہلے انہیں پیرنی کے کہنے پر پنجاب بدر کیا گیا تھا جہاں عثمان بزدار سے اختلاف کے بعد انہیں فارغ کردیا گیاتھا مگر اب وہ دوبارہ وزیراعظم ہاؤس میں نظر آنا شروع ہوگئے ہیں اور انہوں نے طارق بشیر چیمہ کے علاؤہ جہانگیر ترین سے بھی ملاقات کی تھی اور اس ملاقات میں بھی گلے شکوے ہی ہوئے کیونکہ ترین بھی وزیراعظم سے ناراض ہیں اور کچھ حکومتی وزراء ترین اور عمران خان کی صلح میں مصروف ہیں۔

اختلافات

مزید :

صفحہ اول -