حکومت کشمیر صورتحال پر نائب وزیر خارجہ کا تقر ر عمل میں لائے: سراج الحق

  حکومت کشمیر صورتحال پر نائب وزیر خارجہ کا تقر ر عمل میں لائے: سراج الحق

  

اسلام آباد (آئی این پی) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں کورونا وائرس کو بطور ہتھیار استعمال کیا ہے۔مقبوضہ کشمیرحقیقی معنوں میں قید خانہ بن چکاہے، کشمیری خدا کے بعد پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں،کرونا کے بعد دنیا کوسمجھ آئی ہے کہ لاک ڈاؤن کیا ہوتا ہے،،موجودہ حکومت مناسب انداز میں کشمیر کا مقدمہ نہیں لڑ سکی،وزیراعظم کی اقوام متحدہ میں کشمیر پر تقریر پراثر تھی۔ وزیراعظم کی تقریر کے بعد پراسرار خاموشی ہے، عرب ممالک کشمیر کے معاملے پر ہندوستان پر دباؤ ڈالیں، پاکستان، کشمیر پر ایک نائب وزیر خارجہ مقرر کرے،کشمیر پر قومی اسمبلی، سینٹ کا مشترکہ اجلاس بلایا جائے۔ بھارتی آبی جارحیت کے بعد پنجاب بنجر ہوجائے گا،یہ وقت 18ویں ترمیم کو چھیڑنے کا نہیں،پارلیمنٹ میں قانون سازی نہیں ہورہی،بجٹ میں عام آدمی کے مسائل پر فوکس ہونا چاہئے،حکومت پٹرول کے معاملے میں عوام پر ظلم کررہی ہے۔ اتوار کو نجی ٹی وی کو دیئے گئے اپنے خصوصی انٹرویو میں امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پانچ اگست 2019 سے کشمیری لاک دان اور کرفیو میں زندگی گزار رہے ہیں، کرونا کے بعد دنیا کوسمجھ آئی ہے کہ لاک ڈاؤن کیا ہوتا ہے۔ کشمیرحقیقی معنوں میں قید خانہ بن چکاہے۔ 13ہزار کشمیری اب بھی جیلوں میں ہیں۔ حکومت کشمیر پر اپنی ذمہ داریاں پوری کرے۔انہوں نے کہاکہ او آئی سی ایک بے جان تنظیم ہے،او آئی سی صدارتی کرسی پر بھارتی وزیرخارجہ براجمان تھی۔اوآئی سی کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کا تشخص اب کمزور ہے۔قوم کے درد کا ہمارے وزرا کوکچھ احساس نہیں۔سراج الحق انے اپنے انٹرویو میں کہاکہ اسکینڈلز میں بہت سارے مافیا ملوث ہوتے ہیں، بجٹ میں عام آدمی کے مسائل پر فوکس ہونا چاہئے، سودی نظام سے عام آدمی کو فائدہ نہیں ہوتا۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -