بابراعظم اور کوہلی کا موازنہ غیرمنصفانہ اور قبل ازوقت ہے، یونس خان

بابراعظم اور کوہلی کا موازنہ غیرمنصفانہ اور قبل ازوقت ہے، یونس خان

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) سابق کپتان یونس خان نے بابراعظم اور ویرات کوہلی کے موازنے کو غیر منصفانہ اور قبل ازوقت قرار دے دیا۔پاکستان کے مایہ ناز بلے باز یونس خان کا کہنا تھا کہ بابر اعظم اور ویرات کوہلی کا اس وقت موزانہ کرنا ٹھیک نہیں، پانچ سال بعد ایسا کرنا موزوں ہوگا، بابراعظم کے مقابلے میں ویرات کوہلی تجربے میں بہت آگے ہیں۔

، کوہلی اب 31 سال کے ہیں اور اپنے کیریئر کے عروج پر ہیں -

یونس خان نے کہا کہ ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے انٹرنیشنل کرکٹ میں ہیں اور انہوں نے ہر حالت میں خود کو ثابت کیا ہے، انہوں نے 70 بین الاقوامی سنچری اسکور کیں جو ان کی کلاس اور صلاحیتوں کی گواہی ہے۔

سابق کپتان نے کہا کہ دوسری طرف بابر اعظم کو کیرئر کوصرف پانچ سال ہوئے ہیں، اس نے سولہ سنچریاں کی ہیں، ٹیسٹ اور ون ڈے میں اس کی قابل رشک اوسط ہے۔ اس پانچ سال میں بابر میں وہ تمام خوبیاں موجود ہیں جن کی جھلک آپ کو موجودہ کوہلی میں دیکھنے کو مل رہی ہے۔ میرے خیال میں ابھی دونوں کا موازانہ کرنا غیر منصفانہ ہوگا۔

اعصام الحق کو ٹینس کے بین الاقوامی مقابلوں کا جلد انعقاد مشکل نظر آنے لگا

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان کے ٹینس اسٹار اعصام الحق نے کہا ہے کہ کووڈ-19کے دور میں فوری طور پر ٹینس کی بڑے پیمانے پر بین الاقوامی سرگرمیاں شروع کرنا بہت مشکل ہے۔ایک انٹرویومیں اعصام الحق نے کہا کہ کووڈ-19 کے دوران انٹر نیشنل ٹینس کا آغاز انتہائی مشکل ہے، کسی بھی بڑے ٹورنامنٹ میں شرکت کے لیے دنیا کے ہر کونے سے کھلاڑی شرکت کے لیے پہنچتے ہیں، یہ کوئی کرکٹ یا فٹ بال کی طرح نہیں ہے کہ بس دو ممالک کی ٹیمیں ہیں اور انہیں ایک جگہ رکھ لیا جائے، تمام ایس او پیز مکمل کر لیے جائیں اور پھر میچز کا انعقاد کر لیا جائے۔انہوں نے کہاکہ ٹینس کے کھلاڑی پتہ نہیں کون کونسی فلائٹس لے کر اپنے ملک سے وہاں پہنچتے ہیں جہاں انہوں نے ٹورنامنٹس کھیلنا ہوتا ہے، ایسے میں ان کھلاڑیوں کے ٹیسٹ کرنا اور پھر انہیں قرنطینہ کے مرحلے سے گزارنا انتہائی مشکل ہے، اس لیے میں سمجھتا ہوں کہ بڑے بین الاقوامی ٹورنامنٹس کی شروعات اتنی آسان نہیں جتنی کہ فٹ بال اور کرکٹ میں ہیں۔ اعصام الحق کا کہنا ہے کہ ایک ہی ملک میں رہتے ہوئے ایونٹ کرانا آسان ہوتا ہے اور اس میں ایس او پیز بھی مکمل کیے جا سکتے ہیں۔ مقامی سطح پر حفاظتی تدابیر کے ساتھ ٹورنامنٹ کرایا جا سکتا ہے، اسی طرح نمائشی میچز کا بھی انعقاد کیا جا سکتا ہے لیکن ٹینس کے بین الاقوامی ٹورنامنٹس جن میں خاص طور پر گرینڈ سلم بھی شامل ہیں ان کے شروع ہونے میں ابھی وقت لگے گا۔اعصام الحق کے مطابق مقامی سطح پر ہونے والے ایونٹس میں ٹینس کے شائقین کو بھی اکٹھا کیا جا سکتا ہے یا ایسے جگہ جہاں کورونا وائرس کے خطرات کم ہوں وہاں فینز کے ساتھ میچز کرانے میں حرج نہیں ہے، آنے والے دنوں میں چھوٹے ٹورنامنٹس شروع ہوتے ہیں تو وقتی طور پر فینز کے بغیر ہی ہوں گے۔

ٰٓٓٗ آئی پی ایل کی خاطر ٹی 20ورلڈ ملتوی کیے جانے کا امکان

لاہور(سپورٹس رپورٹر)آئی پی ایل کی خاطر ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی کیے جانے کا امکان ہے کورونا وائرس کو جواز بناکر آئی سی سی ٹی20ورلڈکپ کو اگلے سال تک ملتوی کرسکتا ہے, جس کے بدلے میں بھارتی ٹیم کی دسمبر میں آسٹریلیا آکر سیریریز کھیلنا بھی یقینی ہوجائے گا ورلڈکپ 18 اکتوبر سے 15 نومبر تک شیڈول ہیبی سی بی نے پہلے ہی ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی کرنے کی مہم شروع کررکھی ہے مستقبل کے حوالے سے آئی سی سی کا اہم اجلاس 28 مئی کو ہوگاسابق آسٹریلوی کپتان مارک ٹیلر نے پیش گوئی کی ہے کہ آئی پی ایل کروانے کی خاطر ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ ملتوی کردیا جائے گا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق مارک ٹیلرنے کہا کہ کرکٹ آسٹریلیا بھارتی کرکٹ بورڈ کی خواہش پر آئی پی ایل کے لیے نرم گوشہ رکھتا ہے اور کورونا وائرس کو جواز بناکر آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کو اگلے سال تک ملتوی کرسکتا ہے۔ جس کے بدلے میں بھارتی ٹیم کی دسمبر میں آسٹریلیا آکر سیریریز کھیلنا بھی یقینی ہوجائے گا۔سابق آسٹریلوی کپتان نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 18 اکتوبر سے 15 نومبر تک شیڈول ہے، اس کے مستقبل کے حوالے سے آئی سی سی کا اہم اجلاس 28 مئی کو ہوگا۔واضح رہے بھارتی کرکٹ بورڈ نے پہلے ہی ٹی20 ورلڈکپ ملتوی کرنے کی مہم شروع کررکھی ہے۔

شعیب اختر نے اعصام الحق کوقیمتی ایوارڈ عطیہ کردیا

راولپنڈی (این این آئی)قومی کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر نے اعصام الحق فاؤنڈیشن کو شاہ رخ خان کا دستخط شدہ ہیلمٹ عطیہ کردیا۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اعصام الحق نے شعیب اختر کے ہمراہ ایک تصویر شیئر کی جس میں شعیب اختر اپنا مین آف دی میچ کے طور پر ملنے والا ہیلمٹ عطیہ کر رہے ہیں۔انہوں نے اپنا ہیلمٹ ایک عظیم مقصد کے لیے پیش کیا ہے۔

وائرس کے باوجود کھیلوں کی سر گرمیاں شروع ہونی چائیے،جہانگیر خان

لاہور(سپورٹس رپورٹر)کورونا وائرس نے پوری دنیا میں کھیلوں کی سر گرمیاں معطل کردی ہیں پاکستان میں بھی کھیلوں کی منسوخی ہورہی ہے مگر اس کے باوجود ہمیں اس وقت کو حوصلے سے گزارنے کی ضرورت ہے اور حکومت کی جانب سے جو اقدامات کئے گئے ہیں اس پر عمل درآمد کی ضرورت ہے ان خیالات کا اظہار پاکستان ٹیلی ویژن مشعل یونین کے سرپرست اعلی جہانگیر خان نے روز نامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ انٹرنیشنل ایونٹس کورونا وائرس کی نذر ہوگئے جس سے شائقین میں شدید مایوسی پائی جاتی ہے کھیلوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے او ر پتہ نہیں کب تک یہ سلسلہ اسی طرح سے جاری رہے گا انہوں نے کہا کہ کرونا کے باوجود بھی کھیلوں کی سر گرمیوں کو آہستہ آہستہ حفاظتی تدابیر کے ساتھ شروع کردینا چاہئیے کیونکہ ایسے حالات کب تک رہیں اس لئے ضروری ہے کہ چاہے بند دروازوں میں ہی کھیلوں کا انعقاد ہونا چاہئیے کم از کم شائقین ٹی وی پر ہی میچ دیکھ سکیں گے اس موقع پر انہوں نے کہاکہ چیئرمین پی ٹی وی ارشد خان اور ایم ڈی پی ٹی وی عامر منظور ایسے حالات میں بہت اچھا کام کررہے ہیں اور جس طرح سے وہ ادارہ کی ترقی کے اور ملازمین کی بہتری کے لئے کوشاں ہیں وہ قابل تعریف ہیں۔.

پاکستان ٹیلی ویژن قومی ادارہ ہے اور آج بھی اتنے چیلنز ہونے کے باوجود عوام کی پہلی پسند ہے ان کی سر براہی میں ترقی کررہا ہے اور امید ہے کہ اسی طرح سے مستقبل میں بھی یہ سلسلہ جاری رہے گا پی ٹی وی سپورٹس چینل لاک ڈاؤن کے موقع پر شائقین کو ہر طرح کے کھیل سے محظوظ کررہا ہے انہوں نے مزید کہا کہ ہماری یونین کارکنوں کو ان کا حق دلوانے کے لئے کوشاں ہے۔

دورہ انگلینڈ، قومی کرکٹرز کی آئندہ ہفتے سے انفرادی ٹریننگ کا آغاز

لاہور: (سپورٹس رپورٹر) رواں برس انگلینڈ ٹور کیلئے قومی کھلاڑیوں کی انفرادی ٹریننگ کا سلسلہ آئندہ ہفتے سے شروع ہو جائے گا۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ کوچنگ سٹاف اور میڈیکل پینل نے تمام کھلاڑیوں کیلئے معمول کی مشقوں کا منصوبہ تیار کر لیا ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے انگلینڈ ٹور کے پیش نظر آئندہ ہفتے سے قومی کرکٹرز کو انفرادی ٹریننگ شروع کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔پی سی بی میڈیکل پینل کے سربراہ ڈاکٹر سہیل سلیم نے ہر کھلاڑی کیلئے معمول کی ٹریننگ کا مربوط پلان چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ مصباح الحق کی مشاورت سے تیار کر لیا ہے جبکہ باؤلنگ کوچ وقار یونس کے علاوہ سٹرینتھ اینڈ کنڈیشننگ کوچ یاسر ملک سے بھی مشورے اور تجاویز طلب کی گئی ہیں تاکہ احتیاطی تدابیر کو پیش نظر رکھتے ہوئے کھلاڑی تیاری کے مراحل طے کر سکیں۔آئندہ ہفتے شروع ہونے والی ٹریننگ کے پہلے مرحلے میں کھلاڑیوں کی انفرادی طور پر تیاریوں پر توجہ دی جائے گی تاہم جون کے ابتدائی ہفتے میں تمام منتخب کھلاڑی لاہور کی نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں رپورٹ کریں گے جن کو گروپس کی شکل میں ٹریننگ کے مراحل سے گزارا جائے گا۔اس دوران صحت اور حفاظت کے تمام تر احتیاطی تقاضوں کو پیش نظر رکھا جائے گا جبکہ حکومتی اجازت کے بعد انگلینڈ ٹور سے قبل قذافی سٹیڈیم میں ٹریننگ کیمپ کے انعقاد پر بھی غور کیا جا رہا ہے جہاں کھلاڑیوں کو پریکٹس میچز کھیلنے کا موقع فراہم کیا جائے گا تاکہ انہیں ٹور پر مشکلات درپیش نہ ہوں۔چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان نے میڈیا سے ٹیلی فونک کانفرنس کال پر بات کرتے ہوئے کہاکہ انفرادی ٹریننگ کا آغاز کھلاڑیوں کو کرکٹ کی جانب واپس لانے اور کھیل کے میدان آباد کرنے کی جانب بڑا قدم ہے۔

مشکل وقت میں گھبرانے نہیں مقابلہ کرنے کی ضرورت، ٹینس سٹار پلواشہ بشیر

لاہور(افضل افتخار)نامور ٹینس سٹار پلواشہ بشیر نے کہا کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے کھیل بہت متاثر ہورہا ہے اور کھیل میں بہت پیچھی چلی گئی ہوں مگر اس کے باوجود کے حالات کیسے ہیں میں پریشان نہیں ہوں اس کی وجہ یہ ہے کہ پوری دنیا ہی اس وائرس کا شکار ہے اور پریشانی میں ہے بس ضرورت اس بات کی ہے کہ ہمیں ایک بہادر قوم کی طرح اس کا مل کر مقابلہ کرنے کی ضرور ت ہے اور امید ہے کہ جلد ہی میں اس مشکل سے نکل جائیں گے انہوں نے کہا کہ میں بھی دیگر کھلاڑیوں کی طرح گھر پر ہی وقت گزارتی ہوں اور اپنی فٹنس پر مکمل توجہ دئیے ہوئے ہو ں مزید کہا کہ میری خواہش ہے کہ کھیلوں کی سرگرمیوں کو اب آہستہ آہستہ شروع ہوجانا چاہئیے اور اس کے لئے بس احتیاطی تدابیر کو ضرور اختیار کرنا چائیے کیونکہ یہ بہت ضروری ہیں انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں ٹینس میں ویمن ٹیلنٹ بہت زیادہ ہے بس اس کو منظر عام پر لانے کی اشد ضرورت ہے اسی طرح سے ہم اس کھیل میں بھی آگے بڑھ سکتے ہیں امید ہے کہ پاکستان ٹینس فیڈریشن حالات درست ہونے کے بعد زیادہ سے زیادہ ایونٹس کا انعقاد کرے گی جس سے نئے ٹیلنٹ کو بہت فائدہ ہوگا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -