معیشت کی بہتری کیلئے حکومت مارک ریٹ مزید کم کرے؛ حاجی غلام علی

معیشت کی بہتری کیلئے حکومت مارک ریٹ مزید کم کرے؛ حاجی غلام علی

  

لاہور (پ ر) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر اور بزنس مین پینل کے چیئرمین میاں انجم نثار اور نائب صدور ایف پی سی سی آئی روز اول سے مارک اپ ریٹ میں کمی اور پاک افغان دو طرفہ تجارت کھولنے کے لئے جد وجہد کرتے رھے اور آج اللہ کا شکر ھے کہ مارک اپ ریٹ 13.25فیصد سے مسلسل کم ہو کر 8فیصد اور پاک افغان دو طرفہ تجارت طور خم اور چمن بارڈر کھول دئیے گئے اور بزنس کمیونٹی سے کئے وعدے پو رے کر دئیے - سابق صدر ایف پی سی سی آئی اور بزنس مین پینل پاکستان کے سیکرٹری جنرل حاجی غلام علی نے کہاہے کہ ایف پی سی سی آئی کے صدر وکابینہ اور بزنس مین پینل کی پوری تنظیم نے مسلسل جدوجہد کرکے مارک اپ ریٹ 13.25فیصد سے 8 فیصد پر لایا اور مزید جدوجہد کرکے مارک ریٹ کو مزید کم کرنے کے لئے حکومت سے بات چیت جاری رکھیں گے انہوں نے کہاکہ بزنس مین پینل امید کر رہا تھا کہ مارک اپ ریٹ مزید ۲ فیصد تک کم کیا جائے گا۔میاں انجم نثار، کابینہ اور بزنس مین پینل کے ذمہ دار پہلے ہی دن سے کہہ رہے تھے کہ 14فیصد مارک ریٹ پر صنعت وتجارت نہیں چل سکتی اوراس وقت نادان دوست ہمارا مذاق اڑارہے تھے کہ مارک اپ ریٹ کم نہیں ہوسکتی لیکن جد مسلسل سے ساڑھے پانچ فیصد مارک اپ ریٹ کی کمی اور پاک افغان دو طرفہ تجارت کھولنے پر ایف پی سی سی آئی اور بزنس کمیونٹی حکومت کے مشکور ہیں ور انشاء اللہ مارک اپ مزید کم کرنے کے لئے جدوجہد کرینگے۔خطے میں دیگر ممالک سے مقابلہ کرنے کے لئے ضروری ہے کہ صنعت وتجارت کو لیول پلئینگ فیلڈ دی جائے تاکہ خطے میں دیگر ممالک کا مقابلہ کیا جاسکے اور برآمدات بڑھائی جاسکیں اور امپورٹ انڈسٹری کی لاگت میں کمی آئے۔ بزنس مین پینل اپنی جدوجہد جاری رکھے گا تاکہ بزنس کمیونٹی کو ریلیف ملے۔

غلام علی نے کہااس مقصدکے لئے میاں انجم نثار کی سربراہی میں تمام نائب صدورایف پی سی سی آئی اور بزنس مین پینل کے ذمہ داربھر پور کوشش کررہی ہے کہ مارک اپ ریٹ پانچ فیصد پر لایا جائے جبکہ بجٹ 2020-21 کے لئے سابق صدر ایف پی سی سی آئی اور ماہر معاشیات ذکریا عثمان کی سربراہی میں بننے والی بجٹ کمیٹی جسمیں ملک کے ممتاز ماہر معاشیات شامل ہیں کے انتھک محنت اور مشاورت سے بننے والی بجٹ تجویز سے انشاء اللہ مزید سہولت صنعت و تجارت وابسطہ کمیونٹی کو ملی گی اس سلسلے میں وفاقی حکومت کو بزنس کمیونٹی کے مشکلات سے دستاویزی شکل میں آگاہ کردیاہے امید ہے کہ ایف پی سی سی آئی کے بجٹ تجاویز پر وفاقی حکومت اور ایف بی آر مثبت اقدامات کرینگے۔ انہوں نے کہاکہ ذکریا عثمان کی سربراہی میں بننے والے ایف پی سی سی آئی بجٹ تجاویز پر ایف بی آر نے شق وار جو بریفنگ لے کر جوابات دی ہے جو کہ بزنس کمیونٹی کے لئے خوش آئند ہے۔انہوں نے کہا کہ ایف پی سی سی آئی کی قیادت حقیقی بزنس کمیونٹی کے ہاتھوں میں اور بزنس کمیونٹی چیمبرز ایسو سی ا سیشن EC&GB ممبران کے تعاون سے مزید مشکلات کے خاتمے کے لئے جدوجہد کرتے رہیں گے۔

مزید :

کامرس -