ثانیہ نشتر نے بلاول اور مریم اورنگزیب کے بیانات پر حقائق جاری کردیے

 ثانیہ نشتر نے بلاول اور مریم اورنگزیب کے بیانات پر حقائق جاری کردیے

  

اسلام آباد(آئی این پی) معاون خصوصی ڈاکٹرثانیہ نشتر نے کہا ہے کہ احساس کیش پروگرام نیاپروگرام ہے، کیش کی فراہمی کے 3 نظام 2019 میں بنائے گئے تھے جبکہ، بی آئی ایس پی کو احساس پروگرام پرعملدرآمدکی ذمہ داری دی گئی،ڈاکٹرثانیہ نشتر نے بلاول بھٹواور مریم اورنگزیب کے بیانات پر حقائق جاری کرتے ہوئے کہ بی آئی ایس پی34اداروں میں سے ایک ہے، بی آئی ایس پی کو احساس پروگرام پرعملدرآمدکی ذمہ داری دی گئی ہے، جس کی تفصیلات احساس پروگرام حکمت عملی میں درج ہیں،ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ احساس کیش پروگرام نیاپروگرام ہے،احساس ایمرجنسی کیش کی فراہمی کے3نظام2019میں بنائے گئے تھے، بائیومیٹرک ادائیگی کے لئے اظہار دلچسپی کا اشتہار2جنوری2019 کو شائع ہوا اور بائیو میٹرک سسٹم خریداری کاعمل اکتوبر2019میں مکمل ہوگیا، 2بینکوں سے معاہدے اکتوبر2019میں ہوئے،معاون خصوصی نے کہا یہ تمام عمل موجودہ حکومت کے دور میں ہوا، 24دسمبر2019کو8لاکھ20ہزار165 غیرمستحق نام فہرست سے  نکالے جبکہ جنوری 2021میں مزید 29ہزار 921غیرمستحق لوگوں کونکالاگیا،ان کا کہنا تھا کہ 2019میں بی آئی پی ایس ڈیٹاتک رسائی کیلئے پیپرورک شروع کیا گیا، اس تمام عمل کی تاریخیں فائل میں موجودہیں، حکومت کی کوشش ہے باعزت طریقے سے اداروں کوغیرسیاسی کیا جائے اور لوگوں کے فلاح وبہبودکے کام اچھے اورشفاف طریقے سے کیے جاسکیں۔

 ڈاکٹر ثانیہ نشتر 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -