غزہ میں اسرائیلی جارحیت پر مسلمان حکمران زبانی جمع خرچ سے کام نہ لیں: سراج الحق 

غزہ میں اسرائیلی جارحیت پر مسلمان حکمران زبانی جمع خرچ سے کام نہ لیں: سراج ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ فلسطین میں وحشت و بربریت کا بدترین کھیل جاری ہے، مگر عالمی ضمیر خاموشی کی چادر تان کر سو رہا ہے۔ غزہ میں صیہونیوں کی ننگی جارحیت پر مسلمان حکمران زبانی جمع خرچ سے کام نہ لیں۔ امت مسلمہ کو یک جان ہو کر ظالم کیخلاف کھڑا ہونے کی ضرورت ہے۔ پاکستان کو آگے بڑھ کرکردار ادا کرنا چاہیے۔ فلسطین و کشمیر میں ظلم کی سیاہ رات جلد ختم ہو گی۔ مجاہدوں اور آزادی کے متوالوں کو سلام پیش کرتا ہوں۔ جماعت اسلامی جمعہ 21مئی کو ملک کے طول عرض میں فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے لاکھوں پاکستانیوں کو اکٹھا کرے گی۔ امریکہ اور انڈیا کھل کر دہشت گرد اسرائیل کی حمایت کر رہے ہیں۔ مسلم ممالک کے حکمرانوں کو اپنے دوستوں اور دشمنوں کو پہچاننا چاہیے اور اپنے عوام کے جذبات کی ترجمانی کرنی چاہیے۔ پاکستانیوں کے دل فلسطینیوں کے لیے دھڑکتے ہیں۔ قوم سے اپیل کرتا ہوں کہ جماعت اسلامی کے فلسطینیوں کے لیے قائم کیے گئے فنڈ میں بھرپور حصہ ڈالیں۔ لوگ اجتماعی اور انفرادی زندگی میں سنت نبوی کی پیروی کریں تو کامیابی ان کے قدم چومے گی۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے دیر پائین میں عوامی نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سراج الحق نے قوم سے اپیل کی کہ وہ جمعہ کے روز فلسطینیوں کے حق میں نکالی جانیوالی ریلیوں میں بھرپور شرکت کویقینی بنائیں۔ریلیوں میں ماسک پہن کر آئیں اور کرونا ایس او پیز کا خیال رکھا جائے۔ امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ پاکستان کے حکمرانوں نے ہمیشہ  اہم ایشوز پر زبانی جمع خرچ سے کام لیا۔ پاکستان کو امت مسلمہ کی رہنمائی کرنا تھی مگر بدقسمتی سے گزشتہ 73 برسوں میں ایسا نہ ہو سکا۔ کرپٹ اشرافیہ، مافیاز، سرمایہ دار اور جاگیردار ملک کے زوال کے ذمہ دار ہیں۔ سراج الحق نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ بہتر طرز حکمرانی کے قیام اور کرپٹ لوگوں سے جان چھڑانے کے لیے کردار ادا کریں۔ انھوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کا پلیٹ فارم ہر اس شخص کے لیے حاضر ہے جو پاکستان کو حقیقی معنوں میں اسلامی فلاحی مملکت اور اسلام کا قلعہ بنانا چاہتا ہے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -