اعلیٰ تعلیم کی ترویج کیلئے اسلامیہ یونیورسٹی کا اہم کردار

  اعلیٰ تعلیم کی ترویج کیلئے اسلامیہ یونیورسٹی کا اہم کردار

  

بہاول پور(بیورورپورٹ)وزیر مملکت برائے کلائمیٹ چینج زرتاج گل نے کہا ہے کہ اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے کیمپسز سرسبز و شاداب ہیں اور کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کا بہترین نمونہ پیش کرتے ہیں۔پروفیسر ڈاکٹر اطہر محبوب وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی (بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

بہاولپور کے زیرنگرانی یونیورسٹی کیمپسزمیں حال ہی میں ایک لاکھ سے زائد پودے لگائے گئے ہیں جن کے باعث یونیورسٹی ایک خوبصورت منظر پیش کرتی ہے۔وفاقی وزیر نے ان خیالات کا اظہار عید کے دنوں میں نشر کیے جانے والے پاکستان ٹیلی ویژن کے خصوصی ٹاک شومیں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس پروگرام میں وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور انجینئر پروفیسر ڈاکٹر اطہر محبوب،رکن قومی اسمبلی زین محمود قریشی اورمذہبی سکالر حامد سعید کاظمی نے خصوصی شرکت کی۔ اس پروگرام کے پروڈیوسر شفقت عباس مالک تھے۔محترمہ زرتاج گل نے کہا کہ انہوں نے حال ہی میں یونیورسٹی کا دورہ کیا ہے اس موقع پر وہ یونیورسٹی کی خوبصورتی، فیکلٹی اور طلبہ و طالبات کی گرم جوشی اور تعلیم سے لگن سے بے حد متاثر ہوئیں۔ رکن قومی اسمبلی زین محمود قریشی نے اپنی خصوصی گفتگو میں کہا کہ جنوبی پنجاب کی بہتری کے لیے حال ہی میں حکومت نے ہیلتھ، انفراسٹرکچر اور ایجوکیشن کے پیکجز دیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں وائس چانسلر صاحب کو کریڈٹ دینا چاہوں گا کہ انہوں نے یونیورسٹی میں نکھار پیدا کیا ہے اور استعدادمیں اضافہ کیا۔ اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور میں اتنی صلاحیت موجود ہے کہ یہ پاکستان کی ٹاپ یونیورسٹی بن سکتی ہے اور ساؤتھ پنجاب کی ترقی اور اعلی تعلیم کی ترویج کے لئے اس سے بہتر پلیٹ فارم کوئی نہیں ہے۔حکومت کو یونیورسٹی کے انفراسٹرکچرکی بہتری کیلئے مالی امداد کرنی ہے۔ اسلامیہ یونیورسٹی اور بہاؤ الدین زکریا یونیورسٹی میں بہت کام ہو رہا ہے۔نئی فیکلٹیز اور نئی چئیرزکھلی ہیں اور ریسرچ پر بہت زیادہ کام ہو رہا ہے جو کہ سابقہ ادوار میں نہیں ہوا۔صاحبزادہ حامد سعید کاظمی نے بھی جامعہ اسلامیہ کے لئے نیک خواہشات کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ جلد ہی اس عظیم دانش درسگاہ کا تفصیلی دورہ کریں گے۔ پروفیسر ڈاکٹر اطہر محبوب نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور اس وقت تعمیر و ترقی کے عظیم دور سے گزر رہی ہے۔وسائل کے اعتبار سے اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور ایک بڑے انفراسٹرکچر کی حامل ہے جہاں پر ہزاروں طلبہ وطالبات تدریسی اور تحقیقی سرگرمیاں سرانجام دے سکتے ہیں یہی وجہ ہے کہ انہوں نے اپنی آمد کے فوری بعد اس طرف توجہ دی اور یونیورسٹی میں مارننگ اور ایوننگ پروگراموں کو اوپن کر دیا۔ مستقبل کے تقاضوں سے ہم آہنگ تدریسی پروگراموں کا آغاز کیا۔تدریسی شعبہ جات کی تعداد 48 سے بڑھا کر 123 کردی گئی جبکہ فیکلٹیوں کی تعداد7سے بڑھ کر13ہوگئی۔طلبہ و طالبات کی تعداد بیس ماہ میں 13 ہزار سے 46ہزار ہوگئی۔اساتذہ کی تعداد بھی 500 سے بڑھا کر 1000ہو گئی ہے جن میں 450 اساتذہ پی ایچ ڈی ہیں۔اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور طلباء و طالبات کی فلاح و بہبود پر بھرپور توجہ دے رہی ہے۔ ہاسٹل،ٹرانسپورٹ اور میڈیکل کی سہولیات مثالی ہیں۔بہاولپور کے اردگرد 60 کلومیٹر تک موجود شہروں اور قصبات کے طلباء وطالبات کی سہولت کے لیے خصوصی بس سروس چلائی جارہی ہے جس کے باعث طلبہ اور خاص طور پر طالبات کو محفوظ سفری سہولت دستیاب ہوئی ہے۔ ہاسٹل اخراجات کی بچت پسماندہ اور کم ترقی یافتہ علاقوں سے تعلق رکھنے والے ان طلبہ و طالبات کے لئے بہترین تحفہ ہے۔ اس نے اپنے دروازے کمیونٹی کے لیے کھول دیے ہیں جو بھرپور انداز میں یونیورسٹی کی ترقی میں شریک ہیں۔

شرکت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -