مظفر گڑھ، شاہانہ عرف شانی کا دو خواجہ سراؤں پر وحشیانہ تشدد

مظفر گڑھ، شاہانہ عرف شانی کا دو خواجہ سراؤں پر وحشیانہ تشدد

  

ڈیرہ، مظفر گڑھ(سٹی رپورٹر، نامہ نگار)  مظفرگڑھ میں دو خواجہ سراوں پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہو گئی، موصول ہونے والی فوٹیج میں چیلوں  کے بال کاٹتے اور بیلن کے ذریعے(بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

 تشدد کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ جینڈر ایسوسی ایشن شی کی سربراہ شاہانہ عباس شانی کیساتھ دیگر افراد بھی خواجہ سرا چیلوں کو تشدد کا نشانہ بنارہے ہیں۔ چیلے کراچی بھاگ کر بری صحبت میں پڑ گئے تھے.خواجہ سرا رہنماء  شاہانہ عباس شانی کے مطابق بری صحبت میں پڑنے اور بھاگنے پر چیلوں کے والدین کیساتھ ملکر پٹائی کی تھی. دونوں نے اپنے والدین اور میرے سامنے غلطی تسلیم کرکے معافی بھی مانگی تھی.مظفرگڑھ پولیس نے موقف میں بتایا کہ قانونی کارروائی کے لیے کوئی درخواست موصول نہیں ہوئی.آر پی او ڈیرہ غازیخان ڈویژن فیصل رانا نے مظفرگڑھ میں 2 خواجہ سراں پر تشدد کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او مظفرگڑھ سے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی ہے پولیس ترجمان کے مطابق انہوں نے متاثرہ خواجہ سراں کا میڈیکل کرانے اور قانونی کارروائی کا حکم دیا ہے آر پی او نے ڈی پی او مظفرگڑھ کو  تشدد کے مرتکب ملزمان کی گرفتاری اور مقدمہ کے فوری اندراج کی ہدائت کی ہے یاد رہے کہ مظفرگڑھ میں شی میل ایسوسی ایشن کی صدر شاہانہ عرف شانی کی 2 دیگر خواجہ سرا ساتھیوں سمیت 2 خواجہ سراوں پر تشدد کے وڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے جس میں شاہانہ عرف شانی صدر شی میل ایسوسی ایشن دیگر 2 خواجہ سرا ساتھیوں کے ہمراہ 2 خواجہ سراوں کو ڈنڈے کے ساتھ تشدد کا نشانہ بنانے کے ساتھ ان کے بال بھی کاٹ رہی ہے جبکہ شاہانہ عرف شانی کا کہنا ہے کہ دونوں خواجہ سرا بری صحبت میں پڑ چکے تھے اور اس نے ان کے والدین کی رضامندی کے ساتھ ان کی اصلاح کیلئے ان پر سختی کی ہے دریں اثناء گروشاہانہ شانی نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے چیلے عید کی چھٹیاں لیکر گھر جانے کی بجائے کراچی بھاگے، فرار ہونے پر ان پر ٖغصہ والدین کی موجودگی میں اصلاح کے لئے کیا ہے کیونکہ یہ بچے میرے شاگرد ہیں اور میرے پاس تعلیم حاصل کرتے ہیں، انہیں سکلز سکھاتے ہیں۔ بھاگنے پر سزا ہر استاد دیتا ہے۔

تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -