ری فلنگ مافیا آزاد، دکانوں میں ”بم“فٹ، حادثے کا خدشہ

 ری فلنگ مافیا آزاد، دکانوں میں ”بم“فٹ، حادثے کا خدشہ

  

 ملتان (  خصو صی رپورٹر  )  انسانی جان اور ماحول دشمن گیس ری فلنگ مافیا کے خلاف کریک ڈان نہ ہوسکا، شہر و گردونواح میں سلینڈر ری فلنگ کی غیر قانونی طور پر قائم دکانوں کی تعداد بڑھنے لگی۔  بغیر حفاظتی اقدامات گیس کی فروخت انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتی ہے انتظامیہ بغیر حفاظتی اقدامات کام کرنے والوں کو روکنے میں مکمل طور پر ناکام دکھائی دینے لگی، (بقیہ نمبر43صفحہ6پر)

سیل لگے سلنڈر کی فروخت کی بجائے کھلے سلنڈر سے تھوڑی مقدار میں گیس بھرنے کا رجحان زیادہ ہے جو خود دکاندار اور شہریوں کے لیے بھی شدید نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔اس حوالے سے روزنامہ پاکستان کے عوامی سروے میں شہریوں محمد آصف، لیا قت علی، کا شف حسین،محمد عا صم انصاری اورابرار یو سف کا گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ضلعی انتظامیہ کی غفلت کے باعث شہر بھر میں گیس ری فلنگ دکانوں کی تعداد میں بے حد اضافہ ہوچکا ہے۔ بلا لائسنس ایل پی جی گیس فروخت کرنے والے افراد قانون کی گرفت سے باہر ہیں۔انتظامیہ چند افراد کے خلاف تو کارروائی کرتی ہے اور باقی افراد کھلے عام گیس فروخت کررہے ہیں۔ شہر کے وسط میں سینکڑوں گیس ری فلنگ کی دکانیں موجود ہیں۔ دکاندار بغیر کسی حفاظتی انتظامات کے گیس ری فلنگ کا انتہائی خطرناک کام انجام دے رہے ہیں۔ موسم گرما کے باوجود گیس لوڈ شیڈنگ جاری ہے۔ شہری چولہے گرم کرنے کے لیے ایل پی جی سلنڈر فل کرتے ہیں۔ دکانوں پر سیل شدہ سلنڈروں کی بجائے کھلے سلنڈروں سے تھوڑی مقدار میں گیس ری فلنگ جاری ہے۔ دکانداروں کی جانب سے بغیر حفاظتی اقدامات گیس کی فروخت انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتی ہے ماضی قریب میں کئی افسوسناک حادثات بھی رپورٹ ہوچکے۔ لیکن اس سب کے باوجود معاملے کی سنگینی کو بھانپا نہیں جاسکا۔ انتظامیہ کو اسکی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کرنے چاہئیں۔

خدشہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -