"ہماری حکومت جانے پر معاشی استحکام آنے کا بیان دینے والے ڈی جی آئی ایس پی آر شہباز سپیڈ سے روپیہ اور سٹاک مارکیٹ گرنے پر بھی کچھ بولیں" شیریں مزاری کھل کر سامنے آگئیں

"ہماری حکومت جانے پر معاشی استحکام آنے کا بیان دینے والے ڈی جی آئی ایس پی آر ...
سورس: File

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی رہنما ڈاکٹر شیریں مزاری نے پاک فوج اور آئی ایس پی آر کے سربراہ میجر جنرل بابر افتخار کو تنقید کا نشانہ بنا دیا۔

شیریں مزاری نے ٹوئٹر پر ایک ویڈیو ری ٹویٹ  کی جس میں مسلم لیگ ن کے سینیٹر صابر شاہ اقوام متحدہ میں خطاب کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں۔ صابر شاہ کو انگریزی زبان میں  لکھا ہوا بیان پڑھنے میں بھی مشکلات کا سامنا ہے جس پر تبصرہ کرتے ہوئے شیریں مزاری نے کہا  کہ امریکی سازش کے  ذریعے جاہل اور کرپٹ لٹیروں کا ایسا ٹولہ   پاکستان پر مسلط کیا گیا ہے جو عالمی فورم پر پاکستان کو شرمندہ کر رہا ہے۔ انہوں نے ڈی جی آئی ایس پی آر کو ٹیگ کرتے ہوئے کہا کہ یہ پی ٹی آئی نہیں بلکہ پاکستان کو شرمندہ کرنے کا معاملہ ہے جو انتہائی شرمناک ہے۔

اپنے ایک اور ٹویٹ میں شیریں مزاری نے  میجر جنرل بابر افتخار کی نئی حکومت کے قیام کے بعد کی گئی پریس کانفرنس کا ایک کلپ شیئر کیا جس میں ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا تھا کہ نئی حکومت آنے سے ملک میں استحکام آرہا ہے اور ڈالر سستا ہورہا ہے اور سٹاک مارکیٹ اوپر جا رہی ہے۔ 

شیریں مزاری نے سوالیہ انداز میں کہا کہ آخر اس ادارے کو کیسے پتا چلا کہ ہمارے دور میں معیشت عدم استحکام سے دوچار تھی، نیوٹریلٹی کہاں ہے؟ انصاف کا تقاضہ ہے کہ جس شہباز سپیڈ سے روپیہ اور سٹاک مارکیٹ گرے ہیں اس پر بھی ڈی جی آئی ایس پی آر کوئی بیان دیں۔

مزید :

قومی -