ہائی بلڈ پریشر سے دل اور گردوں کی بیماریاں جنم لیتی ہیں: طبی ماہرین

ہائی بلڈ پریشر سے دل اور گردوں کی بیماریاں جنم لیتی ہیں: طبی ماہرین

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


         لاہور(جنرل رپورٹر)پوسٹ گریجویٹ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ و لاہور جنرل ہسپتال کے طبی ماہرین نے کہا کہ ہائی بلڈ پریشر (ہائپر ٹینشن)کئی افراد میں خاموش قاتل بھی ثابت ہوتا ہے، کیوں کہ اس کی علامات طویل عرصے تک ظاہر نہیں ہوتیں۔ اس کے علاوہ ہائپر ٹینشن کی وجہ سے دل کی بیماریوں،،گردوں اور فالج کے خطرات بھی بڑھ جاتے ہیں۔ہائی بلڈ پریشر ہو یا لوبلڈ پریشر دونوں ہی انسانی جسم کی صحت کے لیے نقصان دہ ہو سکتے ہیں۔تاہم کھانے کے معمولات اور طرز زندگی میں تبدیلیاں اس کے خطرات کو کم کرسکتی ہیں۔غیر متوازن زندگی سے فشار خون ہائی بلڈپریشر کے خطرات لاحق ہوجاتے ہیں۔ پرنسپل امیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر ڈاکٹر محمد الفرید ظفر، پروفیسر آف یورالوجی ڈاکٹر خضر حیات گوندل اور گائناکالوجسٹ ڈاکٹر لیلی شفیق نے گفتگو میں کہا کہ ملک میں ہائی بلڈپریشر کامرض بڑی تیز ی سے بڑھ رہا ہے زیادہ تر یہ بیماری پختہ عمریابڑھاپے کے دورمیں لاحق ہوتی ہے مگر پاکستان میں اٹھارہ سال سے اوپر جانے والے کم وبیش 20فیصد افراد کسی نہ کسی درجے پر بلڈ پریشر میں مبتلا ہوجاتے ہیں ہمارے ہاں عورتوں میں بلڈ پریشر کی شرح مردوں سے زیادہ ہورہی ہے۔عام طور پر بلڈ پریشر انسانی جسم میں نقب لگاتا ہے اس لیے مریض کو اس مرض کے حملے کا احساس نہیں ہوتا مگر بعض حالتوں میں اس کا اندازہ ضرور لگایاجاسکتا ہے۔ پروفیسر الفرید ظفر نے کہا کہ بلڈ پریشر کے اسباب میں گردوپیش کا کلچر انسان کے فطری رجحانات اور صفائی ستھرائی کی کیفیت کا بڑا دخل ہے۔ پروفیسر خضر حیات گوندل اور ڈاکٹر لیلیٰ شفیق کا کہنا تھا کہ انسان کی نفسیاتی کیفیت سوچ اور احساسات وغیرہ کا بھی اسکی جسمانی صحت پر بڑااثر مرتب ہوتاہے مثلا جولوگ چھوٹے موٹے معاملات پر بھی غصے اور چڑچڑاہٹ میں مبتلا ہوجاتے ہیں یا وہ زود حس ہوتے ہیں تو انکے خون کا بھی دباؤبڑھ جاتا ہے گھریلو تفکرات معاشی پریشانیاں غربت فاقہ کشی اورلڑائی جھگڑے کا ماحول بھی بلڈپریشر کا سبب بن جاتا ہے۔ پرنسپل پی جی ایم آئی نے شہریوں پر زور دیا کہ ہر روز صبح شام ہلکی پھلکی ورزش اور واک ضرور کریں اپنے مزاج سوچ احساسات اور رویے میں توازن اور اعتدال پیدا کریں اپنی شوگر کولیسٹرول اوربلڈ پریشر کو گاہے بگاہے چیک کروانے سے موذی امراض سے بچا جاسکتاہے۔