حساس تنصیبات پر حملے عمران خان کے بیانات کا نتیجہ: شہباز شریف

    حساس تنصیبات پر حملے عمران خان کے بیانات کا نتیجہ: شہباز شریف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 اسلام آ باد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم شہبازشریف نے کہا  ہے کہ 9 مئی کو حساس تنصیبات پر حملے عمران خان کے بیانات کا نتیجہ ہیں،9 مئی کو ریاست،اس کی علامتوں اور حساس تنصیبات پر حملے ہوئے، باغی حملے کی جڑیں عمران نیازی کی تقاریر کے مندرجات میں پوشیدہ ہیں۔ سوشل میڈیا کی سائٹ ٹویٹر پیغام میں وزیراعظم شہبازشریف نے کہا کہ  عمران نیازی نے ایک سیاسی تحریک کو حق اور باطل کے درمیان جنگ قراردیا، عمران نیازی نے موقف کی پذیرائی کیلئے آزادانہ طور پر مذہبی تصویر کشی کی۔ مسلسل مسلح افواج، آرمی چیف کو بدنام کیا اور حملے کیے۔ ان کی تقریریں سنیں آپ کو آپ کے جواب مل جائیں گے۔وزیراعظم شہبازشریف نے مزید لکھا کہ بہت چالاکی سے حقیقی آزادی کے نعروں کے ساتھ گروہ تیار کیاگیا، گروہ تیارکرنے کا مقصد انہیں تشدد پر اکسانا تھا جس کا مشاہدہ 9 مئی کو سامنے آیا۔سعودی عرب کے نائب وزیر داخلہ ڈاکٹر ناصر بن عبدالعزیز الداد نے اسلام آباد میں وزیراعظم محمد شہباز شریف سے ملاقات کی۔ وزیراعظم نے گزشتہ سال کے شدید سیلاب کے دوران امداد پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا۔وزیراعظم نے سوڈان میں پھنسے پاکستانیوں کو نکالنے کے لیے تعاون فراہم کرنے پر سعودی عرب کی حکومت کا شکریہ بھی ادا کیا۔وزیراعظم نے ”روڈ ٹو مکہ“پراجیکٹ میں پاکستان کو شامل کرنے پر سعودی عرب کی حکومت کو سراہا،”روڈ ٹو مکہ“پراجیکٹ اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے ذریعے حج پر جانے کے خواہشمند پاکستانی حجاج سہولیات فراہم کرے گا۔سعودی عرب اور ایران کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے کیلئے حالیہ معاہدے کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعظم شہبازشریف نے امید ظاہر کی کہ اس سے علاقائی امن اور سلامتی کو فروغ دینے میں مدد ملے گی۔ سعودی نائب وزیر داخلہ نے ان کی اور ان کے وفد کی مہمان نوازی پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان برادرانہ تعلقات تاریخی ہیں۔ انہوں نے پاکستانی وزراء برائے داخلہ، مذہبی امور اور انسداد منشیات کے ساتھ مفید ملاقاتوں پر اپنے اطمینان کا اظہار کیا۔ انہوں نے وزیر اعظم کو بتایا کہ روڈ ٹو مکہ پراجیکٹ کو اگلے سال سے لاہور اور پشاور تک بھی بڑھایا جائے گا تاکہ زیادہ سے زیادہ عازمین کو سہولت فراہم کی جا سکے۔ دوسری طرف وزیر دفاع خواجہ آصف نے 9مئی کے واقعات میں عمران خان کی گرفتاری کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ فوج نیوٹرل ہوجائے، قوم و ملک کے ساتھ کھڑی ہو جائے وہ عمران خان کو پسند نہیں، عمران خان اقتدار کو اپنی وارثت سمجھتے ہیں۔صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر دفاع نے کہا کہ 9مئی منصوبہ تو عمران خان نے بنایا، عمران خان نے پرسوں پھر فوج کی قیادت پر حملہ کیا ہے۔خواجہ آصف نے کہا کہ میانوالی میں 80 سے زائد جہاز کھڑے تھے، اگر یہ لوگ جہازوں کو جلاتے تو موجودہ معاشی حالت میں ہم 5 جہاز کو ری پلیس نہیں کر سکتے، پاکستان کے دوست ممالک پاکستان کے مفادات کیساتھ کھڑے ہوں گے، افراد کے مفادات کے ساتھ نہیں کھڑے ہوں گے،پی ٹی آئی ٹوٹنے کی وجوہات مختلف نظر آرہی ہیں، جو شخص شہدا ء کی توہین میں ملوث ہے وہ دنیا میں عبرت کا نشان بنے گا۔ وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات مریم اور نگزیب نے کہاہے کہ عمران خان کی سوچی سمجھی منصوبہ بندی کے تحت پی ٹی آئی کے مسلح جتھوں اور پلانٹڈ لوگوں نے عسکری تنصیبات سمیت اہم عمارتوں پر حملے کئے، یہ ملک دشمنی اور بغاوت ہے، مسلح افواج ہماری سرحدوں کی محافظ ہیں، یاست کی پروٹیکشن اور ریاست کی رٹ کو قائم کرنا صرف حکومت کی ذمہ داری نہیں،ریاست کے تین ستون پارلیمنٹ، ایگزیکٹوز اور جوڈیشری ہیں، تینوں ستونوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے ریاست کی رٹ قائم کی جائے، عسکری تنصیبات اور ریاستی املاک پر حملہ کرنے والوں کو کو عبرت کا نشانہ بنانا چاہیے،جلاؤگھیراؤمیں ملوث کسی شخص کے ساتھ کوئی رعایت نہیں دی جائے گی،سویلین املاک کو نقصان پہنچانے پر قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی، عسکری تنصیبات پر حملے کرنے والوں کے ٹرائل ہوں گے۔بدھ کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہاکہ نیشنل سیکورٹی کمیٹی کے اجلاس میں 9 مئی کے دن کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ پاکستان کے ازلی دشمن نے 75 سالہ تاریخ میں وہ کام کرنے کی جرات نہیں کی جو 9 مئی کے دن پی ٹی آئی کے مسلح جتھوں نے کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان کی سوچی سمجھی منصوبہ بندی کے تحت پی ٹی آئی کے مسلح جتھوں اور پلانٹڈ لوگوں نے عسکری تنصیبات سمیت دیگر اہم عمارتوں پر حملے کئے۔ مریم اورنگزیب نے کہاکہ ہسپتالوں اور سکولوں کو جلایا گیا، ایمبولینسوں سے مریضوں کو باہر نکال کر پھینکا گیا، ایدھی کی ایمبولینس جلائی گئی، شہداء اور غازیوں کی یادگاروں کی بے حرمتی کی گئی۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ ریڈیو پاکستان کی تاریخی عمارت کو نذر آتش کیا، یہ ملک دشمنی اور بغاوت ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ کسی بھی طور سیاسی یا عوامی احتجاج نہیں تھا، مٹھی بھر مسلح جتھوں نے عمران خان کے کہنے پر یہ کارروائی کی۔ انہوں نے کہاکہ زمان پارک میں بیٹھ کر عمران خان نے اس پورے عمل کی منصوبہ بندی کی، پی ٹی آئی کے مسلح جتھوں نے پاکستان کے جھنڈے جلائے، جس پرچم کو ہم نیچے نہیں گرنے دیتے، اس پرچم کو نذر آتش کیا گیا۔ وفاقی وزیر نے کہاکہ ان لوگوں نے ایمبولینس، ہسپتال، سکول، مسجدیں، جانور منڈیاں جلائیں، یہ کوئی سیاسی ردعمل نہیں۔ وفاقی وزیر نے کہاکہ جلاؤگھیراؤمیں ملوث کسی شخص کے ساتھ کوئی رعایت نہیں دی جائے گی۔ وفاقی وزیر نے کہاکہ ریاست نے ان لوگوں کو بھی تحفظ دینا ہے جنہیں ایمبولینسوں سے باہر نکال کر پھینکا گیا، ریاست نے سکول کے بچوں کو بھی تحفظ فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری سرحدوں کی حفاظت پر مامور جوانوں کے جذبات کو مجروح کیا گیا، شہید جوانوں کی بے حرمتی کی گئی، آج غریب کی سواری میٹرو بس سروس معطل ہے۔ وفاقی وزیر نے کہاکہ جو غریب افراد، سکولوں کالجوں کے بچے اور شہری اس میٹرو بس پر سفر کر رہے تھے، ان کو کون جواب دے گا؟۔علاوہ ازیں وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب سے برطانیہ کے قائم مقام ہائی کمشنر اینڈریو ڈیگلیش نے ملاقات کی جس میں دونوں ممالک نے سوشل اور آن لائن میڈیا پر نفرت انگیزی اور دہشت گردی کے رویوں سے متعلق مواد کے خاتمے کے لئے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ ملاقات میں میڈیا کے مختلف شعبوں، ڈیجیٹل میڈیا، میڈیا ٹریننگ اور فلم سازی میں تعاون سمیت دوطرفہ سفارتی تعلقات کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا گیا،۔وفاقی وزیر اطلاعات نے ہائی کمشنر کو تاج پوشی پر شاہ چارلس سوئم اور برطانیہ کے عوام کو مبارک دی۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ وزیراعظم شہباز شریف کا حالیہ دورہ برطانیہ اور کنگ چارلس سوئم کی تاج پوشی میں شرکت دونوں ممالک کے درمیان احترام اور بااعتماد پر مبنی دوستی کا مظہر ہے۔مریم اورنگزیب نے کہاکہ پاکستان برطانیہ کے ساتھ دوطرفہ تعلقات کو خصوصی اہمیت دیتا ہے، دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے پرعزم ہیں۔ملاقات میں فلم پالیسی اور میڈیا ٹریننگ میں تعاون پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ فلم اور ڈرامہ کسی بھی ملک کی ثقافت اور مثبت تشخص کو اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے داخلہ عطا اللہ تارڑ نے واضح کیا ہے کہ،فساد پھیلانے اور توڑ پھوڑ کرنے والے شرپسندوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی، پی ٹی آئی کارکنوں نے ارض پاک کے مقدس مقامات کی بے حرمتی کی،پی ٹی آئی کارکن سازش کے تحت شہدا کی یادگاروں پر حملہ آور ہوئے۔بدھ کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے داخلہ عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ لاہور میں قائداعظم محمد علی جناح کے گھر کو بھی نہ بخشا گیا،  عمران خان کے بھانجے حسا ن نیازی جناح ہاؤس پر حملے میں ملوث دیکھے گئے، شرپسندوں نے شہداء کی تصاویر کو بھی نذر آتش کیا، 1965 کے ہیروایم ایم عالم کی یادگار کو بھی نشانہ بنایا گیا، شرپسندوں نے کیپٹن کرنل شیر خان شہید (نشان حیدر)کی یادگار کو بھی نقصان پہنچایا،ان مجرموں کو قرار واقعی سزا دلوائی جائے گی، مراد سعید کی کارکنوں کو مشتعل کرنے کی آڈیو موجود ہے، آڈیوز اور ویڈیوز میں پی ٹی آئی رہنماؤں کو شرپسندوں کی قیادت کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے، پشاور میں چاغی پہاڑ کے نمونے کو بھی آگ لگادی گئی،  1947میں پاکستان کی آزادی کا اعلان کرنے والے ریڈیو کو بھی نشانہ بنایا گیا،فساد پھیلانے اور توڑ پھوڑ کرنے والے شرپسندوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی وزیر مملکت برائے پٹرولیم مصدق ملک نے کہا ہے کہ قومی املاک اور حساس تنصیبات پر حملہ کرنے والے کو ضمانتیں کیوں دی جا رہی ہے؟عمران خان نے 190 ملین پاؤنڈ کی کرپشن کی ہے، نظریہ ضرورت کے تحت عمران خان کو ضمانتیں دی جا رہی ہیں تو چھوٹے مجرموں کا کیا قصور ہے، جسٹس منیر، ذوالفقار علی بھٹو کیس اور میاں نواز شریف کے خلاف کیسز کی طرح نظریہ ضرورت کی تاریخ کو نہ دہرائیں، ریاست کی عملداری قائم نہ رہے تو غدر مچے گا اور اس سے کوئی بھی محفوظ نہیں رہے گا، دہشت گردی کے مسئلہ پر کوئی رعایت نہیں ہو گی، ملک میں گیس کے ذخائر کم ہو رہے ہیں، روسی تیل کی درآمد سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں  کمی آئے گی، 10 سے 14 ارب ڈالر کی لاگت سے نئی ریفائنری قائم کریں گے۔ بدھ کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کا ہمارا پورا پروگرام ایک ارب ڈالر کا ہے جبکہ عمران خان نے 190 ملین پاؤنڈ کی کرپشن کی ہے، برطانیہ میں اکنامک کرائمز ایکٹ کے تحت چوری کا پیسہ، کالا دھن اور ایسی آمدنی جس کا حساب نہ دیا جا سکے وہ اس حکومت کو واپس کر دی جاتی ہے جہاں سے یہ لائی گئی ہو، اسی قانون کے تحت بحریہ ٹاؤن کے ملک ریاض کے 190 ملین پاؤنڈ نیشنل کرائم ایجنسی نے پکڑ لئے اور یہ پیسہ پاکستان کے قومی خزانہ میں جمع ہونا چاہیے تھا تاہم ریاست مدینہ اور صادق و امین ہونے کے دعویدار نے یہ فیصلہ کیا کہ یہ پیسہ سرکاری خزانہ میں نہیں ملک ریاض کے اکاؤنٹ میں جمع کرایا جائیگا، اب یہ کہتے ہیں کہ ہم نے سپریم کورٹ میں ملک ریاض کے اکاؤنٹ میں یہ پیسے جمع کرائے ہیں، ریاست مدینہ کا دعویدار عوام سے حقائق چھپا رہا ہے، 
شہباز شریف

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ 9 مئی کے واقعات کے اصل مجرم عمران خان ہیں،لوگوں کو وہ تیار کرتے ہیں،جتھے بھی اپنے ہاتھوں سے ترتیب دیئے،آرمی ایکٹ کے تحت کاروائی  اور اقدامات چلانا آرمی کا فیصلہ ہے،فوج کے شہداء اور گھروں کو نہیں بخشا گیا ہے تو آرمی ایکٹ کا استعمال ضروری ہو گیا ہے، ایک سیاسی کارکن کیلئے جیل سے خوفزدہ ہونا بنتا ہی نہیں ہے،عمران خان کو جیل سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہیے،میرا نہیں خیال کہ عدالتی ریلیف کے ہوتے ہوئے عمران خان کو گرفتار کیا جا سکتا ہے،عمران خان کی گرفتاری ضرور ہونی ہے کیسز ان کے خلاف ہیں،ہر چیز ثابت ہے، دستاویزات موجود ہیں،اب عمران خان کو کیسز کا سامنا کرنا چاہیے۔بدھ کو نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان جھوٹ بولنے کے عادی مجرم ہیں، کبھی وہ اپنے قتل کی بات کرتے ہیں تو کبھی گرفتار کر لئے جانے کی باتیں پھیلاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرا نہیں خیال کہ عدالتی ریلیف کے ہوتے ہوئے عمران خان کو گرفتار کیا جا سکتا ہے،17مئی تک ضمانت ہے، اب عدالت نے ہی اس ریلیف کو ختم کرنا ہو گا ورنہ بہت سے مسائل ہوں گے۔ وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ عمران خان کی گرفتاری ضرور ہونی ہے کیسز ان کے خلاف ہیں،ہر چیز ثابت ہے، دستاویزات موجود ہیں،اب عمران خان کو کیسز کا سامنا کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کو لوگوں کو گرفتار کرنے کا شوق تھا، انہیں لوگوں کا بڑا خیال ہوتا تھا کہ چارپائی مل رہی ہے یا نہیں، اے سی لگایا گیا ہے کہ نہیں، عمران خان کو جیل سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہیے،ایک سیاسی کارکن کیلئے جیل سے خوفزدہ ہونا بنتا ہی نہیں ہے۔وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ عمران خان کی ضمانت آج ختم ہو رہی ہے تو انہیں 12بجے کے بعد گرفتار کیا جا سکتا ہے، 9مئی کے واقعات کا سرغنہ عمران خان ہی ے، لوگوں کو تیار کرتے ہیں اور جتھے اپنے ہاتھوں سے ترتیب دیئے،9 مئی کے واقعات کے اصل مجرم عمران خان ہیں۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ شیریں مزاری، عالیہ حمزہ اور ملیکہ بخاری نے لوگوں کو اشتعال  دلایا اور توڑ پھوڑ میں حصہ لیا، ان کا خواتین بن کر رعایت مانگنا درست نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی ایکٹ کے تحت کاروائی  اور اقدامات چلانا آرمی کا فیصلہ ہے،آرمی ایکٹ ملکی قانون ہے، ان کے شہداء اور گھروں کو نہیں بخشا گیا ہے تو آرمی ایکٹ کا استعمال ضروری ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی کورٹس پہلے سے کام کر رہی ہیں، کلبھوشن سمیت سرحدوں میں شر انگیزی  کرنے والوں کے خلاف کیسز کی سماعت ہوتی ہے، یہ کہنا درست نہیں کہ علیحدہ کوئی نئی فوجی عدالتیں قائم ہوں گی، 9 مئی کے واقعات کے کیسز کی نوعیت کے مطابق دیکھا جائے گا۔
وزیر داخلہ

مزید :

صفحہ اول -