پاکستان اور سعودی عرب کا روڈ ٹو مکہ منصوبے کو پوری طرح نافذ کرنے پر اتفاق

  پاکستان اور سعودی عرب کا روڈ ٹو مکہ منصوبے کو پوری طرح نافذ کرنے پر اتفاق

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


      اسلام آباد (این این آئی)وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ اور سعودی نائب وزیر داخلہ ناصر بن عبدالعزیز نے روڈ ٹو مکہ منصوبے کو پوری طرح نافذ کرنے پر اتفاق کرتے ہوئے کہا ہے اس منصوبے کے تحت عازمین حج کو پاکستان ہی میں سعودی امیگریشن کی سہولت میسر کی جائیگی۔ بدھ کو یہاں وفاقی وزیرداخلہ رانا ثناء اللہ کی سعودی نائب وزیر داخلہ ڈاکٹر ناصر بن عبدالعزیز الداؤد سے وفود کی سطح پر ملاقات ہوئی۔ وزیر مملکت داخلہ عبدالرحمن کانجو، سیکرٹری داخلہ سید علی مرتضیٰ اور دیگر عہدیداران بھی ملاقات میں شرکت تھے۔ملاقات میں پاک سعودی دو طرفہ تعلقات سمیت، باہمی دلچسپی کے دیگرامور پر بات چیت ہوئی، منصوبے کا اگلے مرحلے میں کراچی اور لاہور ائیرپورٹ پر بھی آغاز کرنے پر اتفاق کیا گیا تاکہ زیادہ سے زیادہ حجاج اس سہولت سے مستفید ہو سکیں۔اس سلسلے میں معاہدے پر دستخط کی تقریب وزیر اعظم ہاؤس میں منعقد کی گئی۔وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا اس منصوبے نے پاکستانی حجاج کو بے پناہ سہولت اور آسائش فراہم کی ہے اور اس ضمن میں ہم سعودی حکومت کے شکر گزار ہیں۔ سعودی نائب وزیر داخلہ نے کہا سعودی عرب کی خواہش تھی کہ اس منصوبے کا آغاز سب سے پہلے پاکستان سے کیا جائے،ہماری پوری کوشش ہے سعودی سفارتکار کے 2011 میں قتل کے معاملے کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے اور ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جا ئے۔ ملاقات میں پاکستانی پاسپورٹ رکھنے والے برمی مسلمانوں کے مسئلے کو بھی باہمی مشاورت اور رضامندی سے حل کرنے پر اتفاق ہوا۔وزیر داخلہ نے سعودی نائب وزیر دا خلہ سے سعودی جیلوں میں معمولی جرائم میں قید پاکستانی شہریوں کی جلد رہائی پر استفسار کیا جس پر سعودی نائب وزیرخارجہ نے بتایا 108 پاکستانی شہریوں کو رہا کر دیا گیا ہے، جبکہ کئی قید یو ں کے کیسز کی جانچ پڑتال کی جا رہی ہے، قیدیوں کی جلد رہائی ممکن بنانے کی یقین دہانی،مشترکہ چیلنجز سے نمٹنے کیلئے دونوں ممالک کی داخلہ کی وزارتوں میں کوآرڈینیشن مز ید بہتر بنانے پر اتفاق کیا گیا۔ بعد ازاں وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ کی جانب سے سعودی نائب وزیر داخلہ اور وفد کے اعزاز میں ظہرانا دیا۔اس موقع پروزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا کہ سعودی عرب کے دورہ کے موقع پر جس مہمان نوازی سے مجھے نوازا گیا اس پر شکریہ ادا کرتا ہوں، ہم کچھ عرصہ سے آپ کی میزبانی کے منتظر تھے،ہم مشکور ہیں کہ آپ نے ہمار ے دورہ کی دعوت کو قبول کیا۔ انہوں نے کہا سعودی نائب وزیر داخلہ کا دورہ دونوں ممالک کیلئے اہمیت کا حامل ہے، اس دورہ میں روڑ ٹو مکہ پراجیکٹ پر دستخط کرنے جارہے ہیں۔  سعودی سفارتکار کے قتل، برمی مسلمانوں کے معاملے پراتفاق رائے ہوا ہے، سعودی عرب میں پاکستانی جیلوں میں بند ہیں جن کی سزائیں معمولی ہیں تو ان کی رہائی کیلئے بات چیت کی ہے،سعودی وزیر داخلہ نے یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ پاکستانی جن کے جرائم معمولی ہیں ان کو جلد رہا کر دیا جائیگا۔ پاکستانی عوام کا سعودی عوام کیساتھ محبت کا رشتہ ہے،ہم خادم  الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے محبت، انسیت اور عقیدت رکھتے ہیں۔ پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات کو قائم ہوئے 75 سال ہوچکے ہیں لیکن سرزمین حجاج کیساتھ ہماری روحانی اور جذباتی وابستگی کئی صدیوں پر محیط ہے۔ سعودی عرب 20 لاکھ پاکستانیوں کو باوقار زریعہ معاش فراہم کر رہا ہے،جبکہ پاکستانی سعودی عرب کی ترقی و خوشحالی میں بھرپور کردار ادا کر رہے ہیں،سعودی عرب کیساتھ دوستی کو مضبوط سے مضبوط تر بنانے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ نے کہا پوری قوم، وزیراعظم شہباز شریف کی جا نب سے سعودی خادم الحرمین الشریفین کی صحت کیلئے دعا کرتے ہیں اور سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کو دورہ پاکستان کی دعوت دیتے ہیں۔ اس موقع پرسعودی نائب وزیر داخلہ نے کہا کہ مہمان نوازی پاکستانیوں کی صفت بہت پرانی ہے،جب میں نے اپنے کیئرئیر کا آغاز کیا تو ہر لمحے پاکستانیوں کو اچھا پایا، دورہ پاکستان پر مجھے خوشی ہورہی ہے، مختلف امور کو زیر بحث لایا گیا ان پر اتفاق رائے سے فیصلے بھی ہوئے ہیں۔پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان باہمی تعلقات آج کے نہیں لمبی تاریخ کے حامل ہیں، ہم ان کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور پاکستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے دعا گو ہوں۔
پاک سعودیہ اتفاق

مزید :

صفحہ اول -