سندھ کے نامور تاریخ دان گل حسن کلمتی انتقال کر گئے

  سندھ کے نامور تاریخ دان گل حسن کلمتی انتقال کر گئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ کے نامور تاریخ دان گل حسن کلمتی انتقال کر گئے۔تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ سے تعلق رکھنے والے معروف محقق، ادیب اور تاریخ دان گل حسن کلمتی جہانِ فانی سے کوچ کر گئے، وہ سندھی، اردو، انگریزی کی کئی کتابوں کے مصنف تھے۔گل حسن کلمتی جگر کے کینسر کے مرض میں مبتلا تھے، دسمبر 2022 کے بعد ان کی طبیعت بہت زیادہ ناساز ہو گئی تھی اور وہ بستر پر آ گئے تھے، کراچی کے ایک اسپتال میں ان کا علاج جاری تھا۔گل حسن کلمتی کو صوبائی دارالحکومت کراچی کے حوالے سے تحقیقی کام سامنے لانے پر شہرت حاصل ہے، انھیں کراچی کے لافانی کرداروں میں شمار کیا جاتا ہے، انھوں نے متعدد تاریخی کتابیں لکھیں، تاہم ان کی سب سے مشہور کتاب کراچی سندھ جی مارئی ہے، جس میں انھوں نے صوبائی دارالحکومت کی تاریخ کو جدید انداز میں پیش کیا۔9 بہن بھائیوں میں سے ایک گل حسن کلمتی 5 جولائی 1957 کو کراچی ڈویژن کے قصبے گڈاپ کے چھوٹے سے گاؤں گولاپ میں پیدا ہوئے، اس وقت حاجی رضی بلوچ گاؤں گولاپ ضلع ٹھٹھہ میں تھا، ایوب کے دور میں 1963 میں گڈاپ کو ضلع ملیر میں شامل کیا گیا، گل حسن کے والد محمد خان ایک مزدور تھے۔گل حسن کملتی کی شادی خاندان ہی میں ہوئی، ان کی ایک بیٹی ہے جنھوں نے ایم اے سوشیالوجی کی ڈگری حاصل کی۔ گل حسن نے زمانہ طالب علمی ہی میں ادبی دنیا میں قدم جمائے۔ انھوں نے 1974 میں ایس ایم آرٹ کالج کراچی میں داخلہ لیا اور کالج سے شائع ہونے والے ادبی میگزین میں سندھی ادب پر لکھا اور اس کالج میں سندھی ادبی حلقہ بنایا۔گل حسن کلمتی نے 1979 میں کراچی یونیورسٹی میں صحافت میں داخلہ لیا، جہاں سے 1983 میں ماسٹر کی ڈگری مکمل کی۔

مزید :

صفحہ اول -