میکے سے خرچہ نہ لانے پر نکھٹو شوہر نے بیوی کو پھندا دیدیا

میکے سے خرچہ نہ لانے پر نکھٹو شوہر نے بیوی کو پھندا دیدیا
 میکے سے خرچہ نہ لانے پر نکھٹو شوہر نے بیوی کو پھندا دیدیا

  

شیخوپورہ (ویب ڈیسک) میکے سے خرچہ نہ لانے پر نکھٹو شوہر نے بیوی کو پھندا دیکر قتل کردیا۔ پولیس نے قتل کی واردات کو خودکشی کا رنگ دیدیا۔ غریب خاندان انصاف کے حصول کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگیا۔ منظوراں بی بی کی 8 سال قبل اسحاق سے شادی ہوئی اسحق نکھٹو ہونے کی وجہ سے منظوراں بی بی کو میکے سے خرچہ لانے کا کہتا اور انکار پر تشدد کا نشانہ بناتا اور یہ سلسلہ کافی عرصہ سے چلا آرہا تھا۔ منظوراں بی بی اکثر ناراض ہوکر میکے چلی جاتی تو اسحق مناکر واپس لے آتا۔

استاد کی اپنی ہی طالبات کی ویڈیو بنا کر بلیک میلنگ ، معاملہ پولیس کے پاس پہنچ گیا

آخری بار موضع ڈھامکے میں معززین نے پنچایتی طور پر فیصلہ کیا کہ اگر اسحق نے منظوراں بی بی پر تشدد کیا تو 4لاکھ روپے ادا کرنا پڑیں گے تاہم خاوند اسحق، اسکی والدہ اور بھائی نے منظوراں بی بی کو گھر لیجا کر تشد د کانشانہ بنایا کہ پنچائیت میں ان کی بے عزتی ہوئی ہے اور تشدد کے بعد اس کے گلے پھندا ڈال کر پنکھے سے لٹکا دیا۔ جب قتل کی خبر منظوراںبی بی کے گھر پہنچی تو اسکے ورثا مقدمہ کے اندراج کیلئے تھانہ فیکٹری ایریا گئے تو پولیس نے غریب خاندان کی داد رسی کی بجائے قتل کی واردات کو خودکشی قرار دیکر غریب خاندان کو تھانہ سے باہر نکال دیا جس کے بعد متاثرہ خاندان نے معززین علاقہ کے ہمراہ ڈی پی او آفس کے باہر احتجاج کیا تو ڈی پی او شیخوپورہ کے حکم پر مقدمہ درج ہوگیا اور پولیس نے ملزم اسحق کو گرفتار کرلیا لیکن اب ملزم کیخلاف کارروائی کی بجائے پولیس نے اسے بطور مہمان تھانہ میں رکھا ہوا ہے جس پر ورثا اور معززین علاقہ نے وزیراعلیٰ اور آئی جی پنجاب پولیس سے مطالبہ کیا ہے کہ ملزم کیخلاف سخت کارروائی اور ہمیں انصاف فراہم کیا جائے۔

مزید : شیخوپورہ