ٹھیکیدار عرصے سے تبدیل نہ ہوسکے ،عدالتی کینٹیوں پر گرانفروشی عروج پر صفائی کے ناقص انتظامات

ٹھیکیدار عرصے سے تبدیل نہ ہوسکے ،عدالتی کینٹیوں پر گرانفروشی عروج پر صفائی ...

 لاہور(کامران مغل/عکاسی ذیشان منیر)انصاف کے ایوانوں میں بھی عوام کے ساتھ لوٹ مار جاری ،عدالتی احاطوں میں قائم کینٹینوں پر عملہ حصول انصاف کے لئے آنے والے سائلوں کی جیبوں پر کھلے عام ہاتھ صاف کرنے لگا، کینٹینوں پر صفائی نہ ہونے کے باعث لوگ غیر معیاری اشیاء کھانے پر مجبور جبکہ ان اشیاء کی بازار سے زائدنرخوں پر فروخت بھی معمول بن چکا ہے ،کوئی پوچھننے والا نہیں،انتظامیہ کی خاموشی پر سیشن کورٹ آنے والے سائلین بلبلا اٹھے اورشکایتوں کے انبار لگادیئے،تفصیلات کے مطابق سیشن کورٹ لاہور میں چار کینٹینیں قائم ہیں جبکہ ایوان عدل میں 3 اس کے علاوہ ضلع کچہری ماڈل ٹاؤں کچہری اور کینٹ کچہری میں متعدد کینٹینیں قائم ہیں اور گزشتہ کئی عرصہ سے ان کے ٹھیکیدار بھی وہی ہیں ،ان میں کھانے پینے کی اشیاء اکثر بازار سے زائد نرخوں پر مہیا کی جاتی ہیں جبکہ ان اشیاء کے معیاری ہونے کی بھیکوئی ضمانت نہیں جبکہ ان کینٹینوں پر چیک اینڈ بیلنس کا کوئی نظام نہیں ،جیلوں سے آئے ہوئے قیدیوں سے لے کران سے ملاقات کے لئے آنے والے سائل مہنگی اور غیر معیاری اشیاء خریدنے پر مجبور ہیں۔سیشن کورٹ آئے شہریوں بلال بٹ ، رضوان علی ، میاں علی ، ناصر بیگ اورشفیق نے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیشن کورٹ میں جگہ جگہ کینٹینوں کی بھر مار ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ چائے کا ریٹ20 سے 30 روپے روٹی8سے 10 روپے اور اس کے ساتھ سالن بھی انتہائی مہنگے ریٹوں پر مہیا کیا جاتا ہے جبکہ ان تمام کینٹینوں کوٹھیکیداروں نے ٹھیکے پر حاصل کر رکھا ہے جو یہاں عرصہ دراز سے براجمان ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ یہاں ملنے والی کھانے پینے کی اشیاء کے معیار کو چیک کرنے والا کوئی نہیں ،کینٹینوں میں صفائی کا انتہائی ناقص انتظام ہوتا ہے اور گرمیوں کے موسم میں کینٹینوں پر اکثر مکھیوں کی بھر مار ہوتی ہے جس کے باعث کھانا کھانابھی انتہائی مشکل ہوتاہے مگر مجبوری کی وجہ سے وہ صبح عدالتوں میں آتے ہیں،ان کے پاس یہ کھانا کھانے اور دیگر مضر صحت اشیاء خرینے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہوتا،عدالتوں میں آنے والے سائلین نے حکام بالا سے اپیل کی ہے کہ مذکورہ کینٹینوں پر کھانے کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے عملی اقدامات کئے جائیں تاکہ لوگ معیاری اشیاء کھاسکیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1