اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز کی کتاب کی تقریب رونمائی

اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز کی کتاب کی تقریب رونمائی

لاہور( خبر نگار)پنجاب یونیورسٹی پاکستان سٹڈی سنٹر کے زیر اہتمام اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز کی US Security Policy towards South Asia and Kashmir Disputeکے موضوع پر کتاب کی تقریبِ رونمائی سنٹر کے آڈیٹوریم میں ہوئی۔ تقریب سے ڈین فیکلٹی آف آرٹس اینڈ ہیومینٹیز پروفیسر ڈاکٹر محمد اقبال چاؤلہ ، ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر مسرت عابد ،ڈاکٹر اقدس علی کاظمی ، پروفیسر ڈاکٹر راشد احمد خان، پروفیسر ڈاکٹر مظہر معین ، ڈاکٹر امجد مگسی و دیگر نے کتاب کے سیاق و سباق پرروشنی ڈالی۔

اپنے خطاب میں ڈاکٹر محمد اقبال چاؤلہ نے پاکستان اور امریکہ کے تعلقات کا تاریخی پس منظر پیش کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کبھی بھی پاکستان کا اتحادی نہیں رہا اور نہ ہی مسئلہ کشمیر کے حل میں مخلص رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاک امریکہ تعلقات مستقبل میں بھی ایسے ہی رہنے کا قوی امکان ہے۔ ڈاکٹر مسرت عابد نے کہا کہ قائد اعظم چاہتے تھے کہ پاکستان اور بھارت پرامن ، آزاد اور ایک دوسرے کی سالمیت کا خیال رکھیں لیکن اس کے برعکس دونوں ممالک کے مابین پیدا ہونے والے تنازعات بالخصوص مسئلہ کشمیر کی وجہ سے مثالی تعلقات نہ بن سکے۔ انہوں نے کہاکہ اقوام متحدہ نے کئی بار کشمیر کا تنازعہ حل کرنے کی کوشش کی جو بھارت کی ہٹ دھرمی کے باعث ابھی تک حل نہیں کیا جا سکا۔ ڈاکٹر اقدس علی کاظمی نے کہا کہ ڈاکٹر احمد اعجاز کی تصنیف پاکستان ، بھارت اور امریکہ کے مابین تعلقات کا مکمل احاطہ کرتی ہے۔ ڈاکٹر مظہر معین نے کہا کہ سکالرز کو مسئلہ کشمیر کے حل بارے تحقیق کرناچاہیے۔ انہوں نے کہاکہ امریکہ اور بھارت کے تعلقات پاکستان کیلئے خطرہ کے باعث بن سکتے ہیں۔ تقریب سے پروفیسر ڈاکٹر راشد احمد خان ، ڈاکٹر امجد مگسی و دیگر نے بھی خطاب کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4