وسیم اختر نے ر ہائی کے بعد میئر کراچی کی ذمہ داریاں سنبھال لیں

وسیم اختر نے ر ہائی کے بعد میئر کراچی کی ذمہ داریاں سنبھال لیں

کراچی (اے این این) کراچی کے منتخب میئر وسیم اختر نے جیل سے رہائی کے بعد باقاعدہ طور پر اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں ٗ ایم اے جناح روڈ پر واقع اولڈ کے ایم سی بلڈنگ پہنچنے پر ان کا والہانہ استقبال ٗ پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں جبکہ میئر کراچی کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت ہماری مدد کرے ٗسیاست سے بالاتر ہوکر کراچی کے مسائل حل کرنا چاہتے ہیں۔ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیشی کے موقع پرمیڈیا سے بات کرتے ہوئے وسیم اخترنے کہا کہ عوام نے کراچی کے مسائل کے حل کے لیے انہیں منتخب کیا ہے، بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات اور صفائی کے انتظامات پر بات کریں گے کیونکہ قوانین کے مطابق وزیراعلی سندھ ہی محکمہ بلدیات کے کسٹوڈین ہیں اورکراچی میں موجود کچرے پروزیراعلی سندھ پر تنقید کی جاتی ہے۔وسیم اخترنے کہا کہ اگرکراچی میں کام نہیں ہورہا توانگلی کے ایم سی پراٹھائی جاتی ہے لیکن ہم کام کرنا چاہتے ہیں۔ ہم تصادم نہیں مسائل کا حل چاہتے ہیں، ہمیں سیاست سے بالاتر ہوکر کراچی کے مسائل حل کرنے ہیں، اس لیے سندھ حکومت ہماری مدد کرے اور ہم ان کی مدد کریں گے۔کراچی میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے کہا کہ وفاقی حکومت سے بھی درخواست کی جائے گی کہ کراچی کے لیے کوئی پیکیج دیں کیونکہ اسی شہرسے ہی ملک چلتا ہے۔ اپنی سیکیورٹی کے حوالے ان کا کہنا تھا کہ مجھے پروٹوکول یا کسی بھی قسم کی سکیورٹی کیلئے کوئی بھی رابطہ نہیں کیا گیا۔ گزشتہ روزیا دگارشہدا پرحاضری سے پہلے کشیدہ صورتحال پران کا کہنا تھا کہ رابطہ کمیٹی نے فیصلہ کیا تھا کہ یادگارشہداء پر فاتحہ کیلئے جایا جائے، ہم نہیں چاہتے تھے کہ وہاں بے نظمی ہواسی لیے ہم واپس آگئے۔ قبل ازیں میئر کراچی وسیم اختر ضمانت پر رہائی کے بعد پہلی بار سانحہ 12 مئی کے 4 مقدمات میں پیشی کیلئے انسداد دہشت گردی کورٹ پہنچے تو کے ایم سی کے پروٹوکول آفیسر اور دیگر لوگ انکے ہمراہ تھے ۔ سانحہ 12 مئی کی سماعت شروع ہوئی تو تفتیشی افسران کے مقدمات کے حتمی چالان پیش نہ کرنے پر عدالت نے شدید برہمی کا اظہار کیا ۔ عدالت نے 26 نومبر کو حتمی چالان پیش کرنے کا حکم دیا ۔

مزید : صفحہ اول