کرپٹ ٹولہ پانامہ کیس میں ضرور پھنسے گا،دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا:سینیٹر سراج الحق

کرپٹ ٹولہ پانامہ کیس میں ضرور پھنسے گا،دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے ...
کرپٹ ٹولہ پانامہ کیس میں ضرور پھنسے گا،دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا:سینیٹر سراج الحق

  

لاہور(نیوز ڈیسک)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ کرپٹ ٹولہ پانامہ کیس میں ضرور پھنسے گا۔دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا'ملک سے کرپشن کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے تک جماعت اسلامی عدالتی اور عوامی سطح پر اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔

تفصیلات کے مطابق امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ کرپٹ ٹولہ پانامہ کیس میں ضرور پھنسے گا۔ملک سے کرپشن کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے تک جماعت اسلامی عدالتی اور عوامی سطح پر اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔صوبہ بہاولپور جنوبی پنجاب کے عوام کا حق ہے جسے مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی کی حکومتوں نے مسلسل نظر انداز کیا ۔وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم سے جنوبی پنجاب کے عوام کے اندر شدید احساس محرومی پایا جاتا ہے ۔حکومت نے ترک صدر طیب اردوان کو ریاست کی بجائے خاندانی مہمان بنا کر قومی یکجہتی اور وقار کو شدید نقصان پہنچایا ہے ۔قومی قیادت ترک صدر سے گفتگو کرنا چاہتی تھی جس کا موقع نہیں دیا گیا۔

تعلیمی اداروں میں دہشتگردی کا خطرہ، وزات تعلیم کا ملک بھر میں طلبہ کو فوجی تربیت دینے کا فیصلہ

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بہاولپور میں سابق امیر جماعت اسلامی پنجاب اورپنجاب اسمبلی میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی سیکرٹری ڈاکٹرسید وسیم اختر کی والدہ کے انتقال پر اظہار تعزیت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر ڈاکٹر سید وسیم اختر بھی موجود تھے ۔

انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ مقدمہ کے فیصلے سے پہلے ہی بغلیں بجا کر تاثر دے رہے ہیں کہ انہوں نے میدان مار لیا ہے ،جب کیس کا فیصلہ آئے گا تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن میں موجود کچھ لوگ یہ ثابت کرنے کی کوشش کررہے ہیں کہ احتساب صرف وزیر اعظم اور ان کے خاندان کا ہوگا اور باقی سب لٹیرے صاف بچ جائیں گے مگر یہ تمام خوش فہمیاں اس وقت دم توڑ جائیں گی جب وزیراعظم اور ان کے خاندان کے بعد دوسروں کی باری آئے گی ۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا پہلے دن سے یہ مطالبہ ہے کہ احتساب وزیر اعظم سے شروع کیا جائے اور پھر زرداری اور مشرف حکومتوں کا بھی مکمل احتساب کیا جائے ،پاکستان سے لوٹے گئے سینکڑوں ارب ڈالر بیرونی بنکوں میں پڑے ہیں جبکہ پاکستان پر بیرونی قرضہ 73ارب ڈالر کا ہے ،ہمارا مطالبہ ہے کہ لوٹی گئی دولت واپس لا کر قومی خزانے میں جمع کرائی جائے اور جن پر کرپشن ثابت ہوجائے ان کے تمام اثاثے ،قومی شناختی کارڈز اور پاسپورٹ بحق سرکار ضبط کئے جائیں اور انہیں کسی بھی سطح کے عوامی عہدوں کیلئے نااہل قرار دیا جائے۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ہماری درخواست اور عدالت عظمیٰ میں جمع کرائے گئے ٹی او آرز میں یہ مطالبات پہلے سے موجود ہیں ۔ہم نے سپریم کورٹ سے یہ بھی عرض کیا ہے کہ نظریہ ضرورت کو دفنا دیا جائے۔

مزید : قومی