’شوہر کو سچ بتانے کی بجائے میں نے پورا گھر اُلٹ دیا اور خود کو باندھ کر چوری کا ڈرامہ کیا کیونکہ مجھے ڈر تھا کہ حقیقت بیان کی تو۔۔۔‘

’شوہر کو سچ بتانے کی بجائے میں نے پورا گھر اُلٹ دیا اور خود کو باندھ کر چوری ...
’شوہر کو سچ بتانے کی بجائے میں نے پورا گھر اُلٹ دیا اور خود کو باندھ کر چوری کا ڈرامہ کیا کیونکہ مجھے ڈر تھا کہ حقیقت بیان کی تو۔۔۔‘

  

ماسکو (نیوز ڈیسک) خاوند کی اجازت کے بغیر فضول خرچی میںر قم برباد کرنے والی خواتین اپنی اس غلطی پر کیسے پردہ ڈالیں، اس کی ایک شاندار تکنیک ایک روسی خاتون نے عملی مظاہرہ کرکے بتا دی ہے، اگرچہ اس کوشش کا نتیجہ بہت افسوسناک نکلا ہے۔

اخبار دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 65 سالہ خاتون نے اپنی اور اپنے خاوند کی مشکلوںسے جمع کی گئی دو ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 3 لاکھ پاکستانی روپے) سے زائد رقم فضول خرچیوں میں لٹادی۔ جب رقم ختم ہوگئی تو اسے فکر لاحق ہوئی کہ اپنے خاوند کو کیا بتائے گی۔ اس مسئلے کا خاتون نے انتہائی انوکھا حل نکالا اور اپنے ہی گھر میں ڈکیتی کا ڈرامہ رچادیا۔

خاتون کے ہمسایوں کا کہنا ہے کہ انہیں اچانک گھر میں شوروغل اور چیخوں کی آواز سنائی دی تو انہوں نے پولیس کو اطلاع کردی۔ جب پولیس ادھیڑ عمر خاتون کے گھر پہنچی تو دیکھا کہ اس کے ہاتھ پاﺅں رسیوں سے بندھے تھے اور گھر کا سارا سامان بکھرا پڑا تھا۔ خاتون نے روتے ہوئے پولیس کو بتایا کہ دو ڈاکو گھر میں گھس آئے تھے اور اسے باندھ کر گھر میں پڑی رقم لوٹ کر لے گئے تھے۔

اس نوجوان لڑکی نے 27 سال کی عمر میں بالکل مفت میں وہ کام کردکھایا جس کی خواہش تو ہم سب کے دل میں ہے لیکن لاکھوں روپے لگانے کے باوجود بھی ناکام ہوجاتے ہیں

اگرچہ خاتون نے اپنی فنکارانہ صلاحیتوں کو بھرپورطریقے سے استعمال کرنے کی کوشش کی لیکن پولیس کو شک پڑگیا اور جب اس سے کچھ سخت سوالات کئے گئے تو وہ سچ مچ رودی اور آنسو بہاتے ہوئے بتایا کہ اس نے اپنے خاوند کی رقم ضائع کرنے کے بعد اسے دھوکہ دینے کے لئے ڈرامہ کیا تھا۔

پولیس اس بات پر بہت برہم ہوئی اور خاتون کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز کردیا۔ اگرچہ اسے دھوکہ دہی اور پولیس کا وقت برباد کرنے کے جرم میں پانچ سال قید کی سزا ہوسکتی تھی لیکن جج نے رحم کھاتے ہوئے اسے چھ ماہ کی معطل شدہ سزا سنائی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -