زائد کسٹم ڈیوٹی پاکستان کے ساتھ تجارت میں رکوٹ ہے :افغان کمرشل اتاش

زائد کسٹم ڈیوٹی پاکستان کے ساتھ تجارت میں رکوٹ ہے :افغان کمرشل اتاش

  



کراچی(یواین پی) افغانستان نے پاکستان کے لیے برآمد ہونے والی تازہ پھلوں سمیت جلدخراب ہونیوالی دیگرمصنوعات پرکسٹم ڈیوٹی کی زائد شرحوں کوباہمی تجارت میں رکاوٹ قرار دیدیاہے۔افغانستان کے کمرشل اتاشی محمد فواد آرش اور ڈپٹی کمرشل اتاشی ڈاکٹر حمید فاضل خیل نے سرحد چیمبرآف کامرس کے سابق سینئرنائب صدر اورفرنٹئیرکسٹمزایجنٹس ایسوسی ایشن کے صدر ضیاالحق سرحدی کے ساتھ اجلاس میں کہا کہ حکومت پاکستان افغانستان طورخم سرحد سے برآمدہونے والی ان مصنوعات کی کسٹمزویلیوایشن کا اختیاراگر سرحدوں سے متصل کلکٹریٹس کوفراہم کرے توحقیقی ویلیواسیسمنٹ ممکن ہونے سے باہمی تجارت کے حجم میں اضافہ ممکن ہے۔انھوں نے کہا کہ کسٹم ڈیوٹیوں کی زائد شرحوں پرنظرثانی کی ضرورت ہے۔انھوں نے حکومت پاکستان کو تجویز دی کہ وہ افغانی ٹرکوں کوبھی پشاور سے کراچی تک کنسائمنٹس کی ترسیل کی اجازت دے تاکہ افغان حکومت بھی پاکستانی ٹرکوں کو کابل سے اگلی منزلوں خصوصا وسطی ایشیا تک ترسیل کی سہولت فراہم کرے۔افغانستان پاکستان ٹرانزٹ ٹریڈ ایگریمنٹ میں متعدد مشکلات کی نشاندہی کرتے ہوئے انھیں دور کرنے ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ ماضی کی طرح کراچی سے پشاور/چمن تک بذریعہ ریلوے افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کارگوبھجاجائے اور ایس ا?ر او121کو ختم کیا جائے تاکہ کنٹینرز کے علاوہ لوز کارگو بھی پشاور اور چمن تک آسکے چونکہ نئے معاہدے میں اس وقت بانڈڈکیریئرکو کارگو لانے کی اجازت ہے لیکن بانڈڈ کیریئرزکا فریٹ ریٹ بہت زیادہ ہے اور ٹرانزٹ ٹریڈکنسائمنٹس کی ترسیل میں ان کی اجارہ داری کی وجہ سے ترسیل کی دیگر سہولتوں سے استفادہ کرنا ناممکن ہے۔

مزید : کامرس