سندھ میں کتوں کی نسل کشی پر 50کروڑ خڑچ لیکن ویکسین نہیں دی جاتی:حلیم شیخ

سندھ میں کتوں کی نسل کشی پر 50کروڑ خڑچ لیکن ویکسین نہیں دی جاتی:حلیم شیخ

  



کراچی (آن لائن) پاکستان تحریک انصاف سندھ کے سینیئر رہنما و سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ سندھ میں کتوں کی نسل کشی پر 50 کروڑروپے رکھے جاتے ہیں لیکن ویکسین اسپتالوں تک نہیں پہنچائی جاتی۔ وزیر صحت کو بھی ویکسین لگانے کی ضرورت ہے وہ کبھی کہتی ہیں کہ سارے کتے پاگل نہیں ہوتے اور بچے کتوں سے دور رہیں ہیں خود اپنی ذمہ داری نبھانے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ بلاول زرداری نے سندھ کتوں کے حوالے کر رکھا ہے۔ بلاول پی ٹی آئی کی حکومت جانے کے خواب دیکھنے سے پہلے سندھ حکومت کو دیکھ لیں وہ کس طرح لوٹ مار لگا کر بیٹھی ہے، کرپٹ حکمران جب جیل سے باہر ہوتے ہیں تو گھوڑوں پر ڈوڑتے ہیں۔گرفتار ہونے کے بعد سارے کرپٹ حکمران بیمار پڑ جاتے ہیں اوروہیل چیئر پر آجاتے ہیں۔ سندھ میں ٹڈی دل کے حملوں سمیت ایڈز و قدرتی آفات ان کرپٹ حکمرانوں کے اعمال کا نتیجہ ہے۔ وہ پی ٹی آئی کے رہنما  علماء شیخ الحدیث مولانا ضیا الدین، مولانا مومن عادل و دیگر کے ہمراہ انصاف ہایوس میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ حلیم عادل شیخ نے کہا کہ عمران خان ملک پر صرف 5 برس کے کئے نہیں آئے وہ ملک کے مستقل لیڈر ہیں۔ وہ مہاتیر محمد، طیب اردگان بن کر آئے ہیں۔ سندھ کے وزراء گردن تک کرپشن میں ڈوبے ہوئے ہیں۔ مولانا کو دھرنے سے پندرہ بیس سال تک کا حلوہ ملا ہے۔ مولانا نے پارٹیوں سے چندہ لینے سمیت ملک گیر چندہ جمع کیا تھا۔ مولانا کا دھرنا عوام کے حقوق کے لئے نہیں تھا۔سندھ میں اگر سی ایم ہاؤس کی طرف کوئی بڑھتا ہے تو اس پر تشدد کیا جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ تھر میں لوگ آسمانی بجلی سے شہید ہوگئے جانور مر چکے، ابھی تک کوئی ریلیف نہیں دیا گیا۔ تھر میں علاج وفاق کروا رہی ہے، سندھ حکومت صرف لوٹ مار کرنے کے لئے بنی ہوئی ہے۔

عادل شیخ

مزید : علاقائی