فیض احمد فیض کی یاد میں پانچواں تین روزہ ”فیض فیسٹیول“ اختتام پذیر 

  فیض احمد فیض کی یاد میں پانچواں تین روزہ ”فیض فیسٹیول“ اختتام پذیر 

  



لاہور (آن لائن) عظیم شاعر فیض احمد فیض کی یاد میں 5 واں تین روزہ ”فیض فیسٹیول“ الحمراء آرٹس کونسل میں اختتام پذیر ہو گیا۔ فیسٹیول میں ادب سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات‘ شعراء‘ دانشوروں‘ادیبوں اور مصنفین‘ اداکاروں و فنکاروں سمیت سیاستدانوں،نوجوانوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ فیسٹیول میں کلام فیض پڑھنے کا مقابلوں کا بھی انعقاد ہوا جس میں ادب سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے حصہ لیا۔میلے کا آغاز تصویری نمائش سے کیا گیا‘ فیض فاؤنڈیشن ٹرسٹ کے زیراہتمام منعقدہ 5 ویں فیض میلے میں تیسرے روز الحمراء ہالز میں مختلف پروگرامز منعقد ہوئے جن میں فیض کے کلام ”ساقیا رقص کوئی رقص صباء کی صورت“پر لاہورگرائمر سکول کے بچوں نے شاندار رقص پیش کیا۔ سینما کے مستقبل کے موضوع پر سینئراداکار جاویدشیخ‘ سرمد کھوسٹ‘ واسع چوہدری نے اظہارخیال کیا جبکہ ”21 ویں صدی کے متاثر کن شاعری“ کی ادبی بیٹھک میں نفیسہ شاہ‘ بلال ظہور‘ ڈاکٹرطاہر کامران نے ادب اور فنون لطیفہ پر اپنے خیالات کا اظہار کیا اور فیض احمد فیض کی ادب کے حوالے سے خدمات کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔اس موقع پر فیض کے شعری مجموعہ ”جو بھی رستہ چنا اس پر چلتے رہے“کے حوالے سے ڈاکٹر اسحاق سمیجو‘ڈاکٹر سعدیہ کمال‘احمد سلیم‘فاطمہ حسن‘افضال مراد اور افراسیاب خٹک نے انقلابی شاعری پر تفصیلی روشنی ڈالی اور ان کے شعروں کی تشریح پیش کی۔

فیض فیسٹیول

مزید : صفحہ آخر