سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کا کوٹہ برابر،حج پالیسی ہوپ کی مشاورت سے بنائی جائے:الحاج جاوید اختر

سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کا کوٹہ برابر،حج پالیسی ہوپ کی مشاورت سے بنائی ...

  



لاہور(انٹرویو:میاں اشفاق انجم)سعودی موسسہ جنوب ایشیاء کی طرف سے پاکستانی پرائیویٹ حج 2019ء کی کارکردگی کی تحسین قابل ستائش ہے، پرائیویٹ حج سکیم میں نوجوان نسل کی غیر معمولی دلچسپی نے ہمارے حوصلے بڑھائے ہیں،حج2020ء کے لیے سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے کوٹہ کی تقسیم ففٹی ففٹی کے حساب سے کی جائے،50کوٹہ والوں کا کوٹہ بڑھایا جائے،بنک گارنٹی فوری ریلیز کی جائے،حج پالیسی 2020ء کے لیے ہوپ کے نمائندوں کو مشاورت کا حصہ بنایا جائے،سرکاری اور پرائیویٹ حج سکیم کی حج پالیسی پر عمل درآمد ایک ساتھ کیا جائے، ای حج کا نظام جلد فعال کیا جائے،سرکاری سکیم کی طرح پرائیویٹ سکیم کی پالیسی بھی کم ازکم 3سال کے لیے بنائی جائے،حج کمپنیوں کے لیے ایاٹا کی لازمی شرط واپس لی جائے ان خیالات کا اظہار ہوپ کے مرکزی رہنما اسلام آباد زون کے سابق چیئرمین الحاج جاوید اختر نے روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہا کہ لانگ ٹرم حج پالیسی وقت کی ضرورت ہے،لانگ ٹرم پالیسی سے پرائیویٹ حج سکیم کا حج بھی سستا ہو سکتا ہے،جاوید اختر نے کہا کہ ہم پاکستان حج مشن کی نگرانی میں کام کرتے ہیں اس لیے ایاٹا کی شرط کی ضرورت نہیں ہے لازمی شرط کا فیصلہ واپس لیا جائے یا ایاٹا کروانے کے لیے کمپنیوں کو کم ازکم دو سال کی مہلت دی جائے،جاوید اختر نے وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری اور وفاقی سیکرٹری میاں مشتاق احمد کی طرف سے حج2020ء آپریشن کے لیے کیے گئے اقدامات کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ای حج سسٹم کی فوری بحالی سے بہت سی مشکلات پر قابو پایا جا سکتا ہے،ریال کی قیمت بڑھنے کی وجہ سے گزشتہ سال بہت زیادہ مسائل کا سامنا رہا،حج پیکیج ریال میں بنانے کی اجازت دی جائے اور حج 2020ء کیلئے ائیر لائنز کے حوالے سے اوپن سکائی پالیسی دی جائے،ائیر لائنز کو45کلو وزن لانے کا پابند کیا جائے،جاوید اختر نے کہاکہ سرکاری سکیم کی طرح پرائیویٹ سکیم کے لیے بھی مکتب کے حصول کے لیے سرپرستی کی جائے،انہوں نے کہا کہ موسسہ جنوب ایشیاء کے چیئرمین رافعت بدر اور وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کی طرف سے حج2019ء میں پرائیویٹ حج سکیم کی کارکردگی کو قابل ستائش قرار دینے سے ہمیں نیا حوصلہ ملا ہے،انہوں نے کہا جن کمپنیوں کے خلاف شکایت نہیں ہے ان کی بنک گارنٹی فوریہ ریلیز کی جائے تا کہ سود سے بچا جا سکے اورحج پالیسی کا اعلان فوری کیا جائے۔    

الحاج جاوید اختر

مزید : صفحہ آخر