حکومت ختم کرنے کیلئے اپوزیشن پارٹیاں پارلیمنٹ سے مستعفی ہو جائیں:سراج الحق

حکومت ختم کرنے کیلئے اپوزیشن پارٹیاں پارلیمنٹ سے مستعفی ہو جائیں:سراج الحق

  



باجوڑ(این این آئی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت قبائلی اضلاع کے عوام کے ساتھ انضمام کے وقت کیے گئے وعدوں کو پایہ تکمیل تک پہنچائے اور ان علاقوں کے تعمیر و ترقی کے لیے مختص سالانہ سو ارب روپے فوری طور پر ریلیز کی جائے۔ دوسرا مالی سال شروع ہونے میں چند ماہ باقی ہیں لیکن تاحال قبائلی اضلاع کیلئے ان مختص شدہ رقم میں سے ایک روپیہ بھی ریلیز نہیں ہوسکا۔ ایک ایسی بے برکت حکومت آئی ہے کہ دیگر چیزوں کی طرح آخر کار ٹماٹر بھی مہنگا ہوگیاہے اور لوگوں نے ٹماٹر کے باغوں پر چوکیدار بٹھادئیے ہیں۔ حکومت کو ختم کرنے کیلئے واحد راستہ یہ ہے کہ اپوزیشن جماعتیں پارلیمنٹ کے نشستوں سے مستعفی ہوجائیں مگر پیپلز پارٹی اور ن لیگ اس کام کیلئے تیار نہیں ہیں۔ ہم غیر جمہوری طریقے سے حکومت ختم کرنے کے حق میں نہیں کیونکہ پھر دس سال مزید مارشل لاء میں گزارنے ہوتے ہیں۔ اسلئے بہتر ہے کہ اپوزیشن جماعتیں اس نظام کا متبادل تلاش کریں اور یہ طے کریں کہ کس دھاندلی کے بغیر الیکشن ہوسکتے ہیں۔ہم نے حکومت کو تجویز دیا تھا کہ آزادکشمیر کے اسمبلی میں مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کو نمائندگی دی جائیں اور آزادکشمیر کے وزیر اعظم کو مقبوضہ کشمیر کا وزیر اعظم بھی ڈکلیئر کیا جائے تو کشمیر پر ہمارا موقف اور بھی مضبوط ہوجائیگا لیکن موجودہ حکومت نے ایسا کرنے کی بجائے کشمیر کاز کو مزید نقصان پہنچایا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے باجوڑ کے ایک روزہ دورے کے موقع المرکز اسلامی عنایت کلے میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ صوبائی نائب امیر صاحبزادہ ہارون رشید، قبائلی اضلاع کے امیر حاجی سردار خان، ضلعی امیر مولانا وحید گل، قاری عبدالمجید، محمد حمید صوفی اور دیگر بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ انضمام کے وقت قبایلی اضلاع کے عوام کیساتھ جتنے وعدے ہوئے تھے اس پر عملدرآمد نہیں ہورہاہے بلکہ حکومت ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر