عوام کو روزگار کی فراہمی‘ مہنگائی پر کنٹرول ہمارا اگلا ہدف‘ شاہ محمود قریشی

عوام کو روزگار کی فراہمی‘ مہنگائی پر کنٹرول ہمارا اگلا ہدف‘ شاہ محمود قریشی

  



ملتان (نیوز رپورٹر) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ان ہاؤس تبدیلی کا کوئی امکان نہیں۔ کچھ لوگوں کو خوش فہمی ہے اور خوش فہمی رہے گی۔تحریک انصاف نے ہمیشہ عدلیہ کا احترام کیا۔ نواز شریف کے حوالے سے عدالت کے فیصلے پر وزیراعظم نے کور کمیٹی کا اجلاس طلب کیا ہے اور عدالتی فیصلے پر مشاورت کا آغاز کردیا ہے۔ لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جانے (بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

کے بارے میں پارٹی میں مشاورت کررہے ہیں۔ہائیکورٹ کے فیصلے کی تفصیل کے بعد حکمت عملی طے کریں گے اورجلد ہی حکومتی لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔ نواز شریف کے فیصلے کے دو پہلو ہیں ایک قانونی اور دوسرا انسانی ہمدردی کاانسانی پہلو کو مد نظر رکھتے ہوئے کابینہ نے نواز شریف کو باہر جانے کی اجازت دیدی۔ اس سلسلے میں عدالت نے دونوں ٹیموں کو سامنے رکھتے ہوئے ایک شرط عائد کی کہ وہ انڈرٹیکنگ دیں۔ جو شہباز شریف نے دیدی ہے اور نواز شریف نے اس کی حمایت کی ہے۔ شہباز شریف نے واضح کہا ہے کہ ہم چار ہفتوں کیلئے باہر لے جا رہے ہیں اور ہم واپس لانے کے پابند ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ملتان میں مرکزی انجمن تاجران کے زیر اہتمام منعقدہ تاجر کنونشن سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ مرکزی انجمن تاجران کے چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی‘ صوبائی معاون خصوصی حاجی جاوید اختر انصاری‘ شاہد محمود انصاری تاجر رہنما?ں کی ایک بہت بڑی تعداد اس موقع پر موجود تھی۔انہوں نے کہا آصف زرداری اورمیاں نواز شریف کی بیماری کی نوعیت میں فرق ہے اگر آصف زرداری کی صحت کے حوالے سے کچھ ہے تو بلاول بھٹو بیا ن بازی نہ کریں بلکہ قانونی حکمت عملی لائیں۔انہوں نے کہا دھرنے کے دوران چودھری شجاعت اور پرویز الٰہی کا کردار مثبت تھا۔ ہم چودھری برادران کے کردار کو سراہتے ہیں۔ ق لیگ ہماری حکومتی حلیف ہے۔ ہمارا ان کے ساتھ اعتماد کا رشتہ ہے۔ انہوں نے کہا دھرنے والوں نے 13دن بعد خودپلان اے ختم کرے پلان بی شروع کیا ہے۔ حکومت نے دھرنا والا مرحلہ خندہ پیشانی سے طے کیا ہم نے کسی کو گرفتار نہیں کیا کسی پر لاٹھی چارج نہیں کیا۔ ہم نے کسی کو تنگ نہیں کیا۔دھرنا والوں کے لیے سہولتیں پیدا کیں جمعیت علمائے اسلام ف کے کارکنوں نے مختلف شہروں میں بندشیں پیدا کیں جس کوعوام نے مسترد کردیا۔بھارت کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا بھارت کیساتھ اس وقت تعلقات کشیدہ ہیں اس نے کشمیر پر انسانی حقوق پامال کررہا ہے۔ ہم نے کررتار پور راہداری کھول کرہم نے اچھی مثال قائم کی ہے۔ اورروادری کا مظاہرہ کیا جبکہ ہمارے برعکس بھارت بابری مسجد گرا رہا ہے۔ دنیا کو اس کا تکابلی جائزہ لینے چاہئے۔ انہوں نے کہا بھارت کے ساتھ ہمارے تعلقات کشیدہ ہیں بھارت سے مطالبہ کیا جاتا ہے کشمیرمیں فوری طور پر کرفیو ہٹائے۔ آج یورپی یونین بھی بھارت کو تنقید کا نشانہ بنا رہا ہے۔ ان حالات میں بھارت کے ساتھ تعلقات معمول پر آتے دکھائی نہیں دے رہے۔ افغانستان کی جانب سے کراس بارڈر حملوں کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا افغان حکومت سے رابطے میں ہیں اور اس حوالے سے ہمارے وفود وہاں گے ہیں اور افغان قیادت سے ملاقات کی جس کے نتیجے میں غلط فہمیاں دو رہوئیں ہیں۔ ایران اور سعودی عرب میں ثالثی کے حوالے سے ایک جواب میں وزیر خارجہ نے کہا پاکستان کے ایران اور سعودی عرب کے ساتھ برادارانہ تعلقات ہیں اور پاکستان کی خواہش ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی دور ہو۔ اس سلسلے میں وزیراعظم عمران خان نے دونوں ممالک کا دورہ کیا اور اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کیں۔ ہمارے دورہ کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کم ہوئی ہے اور تنا? ختم ہوتا نظر آر ہا ہے۔انہوں نے کہا وزارت خارجہ اکنامک ڈپلومیسی کے ذریعے ملکی معیشت کی بہتری کیلئے بھرپور اقدامات کررہی ہے۔ 27اور28نومبر کو افریقاً خطے کے سفیروں کی 2روزہ کانفرنس بلائی جا رہی ہے۔ جس کا مقصد ملکی معیشت کو مضبوط کرنا ہے۔ انہوں نے کہا اس کانفرنس میں مشیر تجارت عبدالرزاق دا?د اپنی ٹیم کے ساتھ شریک ہونگے میں نے ان سے درخو است کی ہے کہہ مختلف غیر ملکی میشنز میں کامرس اتاشیز کو متحرک کیا جائے اور مختلف سفارت خانوں میں کامرس اتاشیز کی خالی آسامیوں کو فل فور پر کیا جائے تاکہ ملک میں نہ صرف دو طرفہ تجارت میں اضافہ ہو بلکہ غیرملکی سرمایہ کاری میں اضافہ ہو سکے۔ انہوں نے کہا حکومت ملکی معیشت میں اضافے کیلئے تمام اقدامات بروئے کار لا رہی ہے۔ آئی ایم ایف اور دوسرے عالمی اداروں نے اس حوالے سے ہماری حکومت کے اقدامات کو سراہا ہے۔ہماری حکومت نے ملک کو دیوالیہ ہونے سے بچایا۔ ملکی معیشت بہتری کی طرف گامزن ہے ہماری اگلی توجہ مہنگائی پر کنٹرول کرنا اور عوام کو روزگار فراہم کرنا ہے اور انشاء اللہ ہمارے اقدامات کے مثبت نتائج برآمد ہونگے۔انہوں نے کہا قطر کو افرادی قوت کی فراہمی کے حوالے سے بات چیت جاری ہے جلد ہی عوام کو اچھی خبر دیں گے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا زلفی بخاری اور نواز شریف کے کیس میں فرق ہے۔ زلفی بخاری کو کوئی سزا نہیں ہوئی جبکہ نواز شریف کو اعلیٰ عدلیہ نے سزا دی۔نیب کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا نیب ایک جماعت نہیں بلک ایک خود مختیار ادارہ ہے۔ نیب کو تمام ذمہ داروں کیخلاف بلا تفریق کارروائی کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا جنوبی پنجاب کے اراکین کے وزیراعلیٰ پنجاب سے نالاں ہونے کے حوالے سے کوئی معلومات نہیں اور نہ ہی کوئی اراکین اسمبلی ان سے نالا ں ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی تبدیلی کا کوئی امکان نہیں دکھائی دے رہا۔ انہوں نے کہا حکومت نہیں چاہتی کے صحافیوں کو بے روزگار کیا جائے۔ صحافیوں کو ڈا?ن سائزنگ سے حکومت کا کوئی تعلق نہیں۔ میڈیا کے ادارے آزاد خود مختیار ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا امریکہ سے تعلقات میں بتدریج بہتری آرہی ہے۔افغانستان کے امن عمل پر امریکہ ہمارے کردار کو سراہا رہا ہے۔انہوں نے کہا واضح کہاوزیراعلیٰ پنجاب کے ساتھ اختلافا ت کی خبر بے بنیاد ہے آج بھی ملتان انتظامیہ کے ساتھ ملتان کے ترقیاتی پیکیج کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس ہوا ہے جلد ہی ملتان کی ترقی کیلئے ایک بہت بڑے پیکیج کا اعلان کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا جنوبی پنجاب سیکٹریٹ کے حوالے سے کام جاری ہے۔ ادھر پیر آف گولڑہ شریف پیر معین الحق گیلانی‘ سابق وفاقی وزیر سید حامد سعید کاظمی اور ممتاز عالم دین سید ارشد سعید کاظمی گزشتہ روز وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی رہائش گاہ باب القریش ملتان آئے انہوں نے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی ہمشیرہ مرحومہ اور ان کے کزنوں نواب عاشق حسین قریشی مرحوم اور نواب ریاض حسین قریشی مرحوم کے انتقال پر اظہار افسوس کیا اور مرحومین کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ پڑھی۔ انہوں نے مرحومین کے درجات کی بلندی اور سوگوار خاندان کے لیے صبرو جمیل کی دعا کی۔ اس موقع پر ممتاز صنعت کار خواجہ یونس‘ مفتی سمیع الحق خطیب اعظم گولڑہ شریف محمد اجمل کھچی‘ محمد صدیق معین اور ڈاکٹر آصف قریشی بھی اس موقع پر موجود تھے۔دریں اثناء گورنر سندھ عمران اسماعیل وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کے گھر آئے اور انہوں نے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ان کی ہمشیرہ اور کے کزنوں نواب ریاض حسین قریشی مرحوم اور نواب عاشق حسین قریشی مرحوم کے انتقال پر اظہار تعزیت کیا۔ انہوں نے مرحومین کی مغفرت اور بلندی درجات کیلئے فاتحہ خوانی کی اور لواحقین کیلئے صبرو جمیل کی دعا کی۔ گزشتہ شب وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے صوبائی وزیر توانائی کی رہائش گاہ پر منعقدہ سیرت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا دنیا کی سب سے پہلی فلاحی ریاست حضور پاک ؐ نے قائم کی۔ مغرب اسی نظام کوآج یورپ اورپوری دنیا میں ویلفئیر سٹیٹ کے نام سے پیش کر رہا ہے۔موجودہ حکومت ریاست مدینہ کے حوالے سے فلاحی ریاست کے قیام کیلئے کوشاں ہے۔ صحت انصاف کارڈ اور احساس پروگرام فلاحی ریاست کی طرف پیش قدمی ہے۔انہوں نے کہارسول پاک ؐ کی ذات و سیرت کسی ایک مکتب فکر کیلئے بلکہ پوری انسانیت کیلئے مشعل راہ ہے۔آپؐ رہتی دنیا تک سب سے بڑے رسول،قانون دان،جرنیل،حکمران اور سیاستدان ہیں۔پیارے نبیؐ کو ہر صفت عروج کے اعلیٰ ترین درجہ پر عطا ہوئی۔حضوراکرم ؐکی زندگی کے مختلف پہلووں سے ہمیں رہنمائی تلاش کرنی ہے۔رسول پاک ؐ کی تعلیمات پر عمل کرکے نہ صرف ہم دین و دنیا میں فلاح پاسکتے ہیں بلکہ انتہائی پسندی اور دہشتگردی جیسے اثرات پر قابو پاسکتے ہیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک نے حضرت محمدؐ پوری دنیا کے لیے رحمت العالمین بن کر آئے۔حضور پاک ؐ نے عرب کے صحرا میں جواسلام کی شمع روشن کی ا س سے آج پوری دنیا منور ہے۔حضورؐ کا تذکرہ برکات،فیوض،رحمتوں اور اجروثواب کا بہترین ذریعہ ہے۔سیرت کانفرنس میں ملک کے نامور نعت خواں قاری وحید ظفر قاسمی نے پیارے نبی کے حضور گلہائے عقیدت پیش کئے۔قاری عبدالغفار نقشبندی نے قرآن مجید کی تلاوت کے ذریعے اہل ایمان کے دل منور کئے۔ کانفرنس میں وزیراعلی پنجاب کے معاون خصوصی جاویداخترانصاری، ممبران صوبائی اسمبلی وسیم خان بادوزئی ا ور ملک سلیم لابر،معروف سیاسی و سماجی شخصیات میاں جمیل احمد، حاجی ملک عطاء، انس اختر، اویس اختر، ڈاکٹرفہیم لابر،نجف خان سیال،مہر اشفاق،ملک فاروق،عمر نواز خان بابر،خضر حیات،ملک سعید، چوہدری کریم،اقبال مان،شیخ زین،راناعمران شمشاد،چوہدری ارشع،ملک روف،حاجی مرید حسین سمیت مختلف طبقہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی شخصیات کی بڑی تعدادنے شرکت کی۔کانفرنس کے اختتام پر وزیرخارجہ مغدوم شاہ محمود قریشی نے دعا کرائی۔قبل ازیں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے گزشتہ روز مصروف دن گزارا۔این اے 156 کی مختلف یونین کونسلوں کا دورہ کیا۔ یوسی25 یوسف ڈوگر و مقصود ڈوگر کی رہائش گاہ پر کارنر میٹنگ سے خطاب کیا اور معززین علاقہ سے ملاقات کی۔ سابق یوسی ناظم ملک سلیم بھٹہ کی خوشدامن کی قل خوانی میں شرکت کی۔ مجلس وحدت مسلمین کے رہنما انجینئر سخاوت حسین کے ماموں کی وفات پر فاتحہ خوانی کی۔ یوسی 62میں چودھری وکیل گجر کی فاتحہ خوانی میں شریک ہوئے۔گھانگلہ چوک میں شریف میتلا کی اہلیہ کی فاتحہ خوانی کی۔ ملک سلیم اعوان کی فاتحہ خوانی میں شریک ہوئے۔ پی ٹی آئی رہنما صنوبر قریشی کی الیکٹرانک شاپ کا افتتاح کیا۔ یونین کونسل20میں پی ٹی آئی رہنما واجد شوکت کی رہائش گاہ پر گئے اور انہیں عمرہ کی مبارک باد دی۔ اس موقع پر صوبائی پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات ندیم قریشی‘ سید بابر شاہ‘ رانا عبدالجبار‘ رانا افضل ودیگر ان کے ہمراہ تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر