بلوچستان: گیارہ جیلوں میں 150قیدی ہیپاٹائٹس، ایڈز میں مبتلا، ڈاکٹر ز بھی ناپید

بلوچستان: گیارہ جیلوں میں 150قیدی ہیپاٹائٹس، ایڈز میں مبتلا، ڈاکٹر ز بھی ...

  



کوئٹہ (این این آئی)بلوچستان کی جیلوں میں ڈیڑھ سو کے لگ بھگ قیدیوں کے خطرناک موذی امراض میں مبتلا ہونے کا انکشاف ہوا ہے جبکہ صوبے کی جیلوں میں طبی سہولیات کا شدیدفقدان ہے دو جیلوں کے علاوہ کسی جیل میں لیبارٹری تک کی سہولت نہیں تاہم ابھی تک کسی قیدی نے اپنا علاج جیل سے باہر کرنے کیلئے درخواست نہیں دی محکمہ جیل خانہ جات ذرائع کے مطابق بلوچستان کی گیارہ جیلوں میں ڈھائی ہزار کے لگ بھگ قیدی پابند سلال ہیں جن میں 36ایڈز اور 110قیدی ہیپاٹائٹس جیسے موذی امراض کا شکا ر ہیں،دوسری جانب صوبے کی گیارہ جیلوں میں امراض کی تشخص اور علاج کی بنیادی سہولت بھی میسر نہیں ہیں سنٹرل جیل مچھ اور ڈسٹرکٹ جیل میں منی لیب ضرور موجود ہے جس میں عام امراض کے مریضوں کے ٹیسٹ کئے جاسکے ہیں لیکن موذی امراض کے ٹیسٹ کیلئے دیگر سرکاری اداروں کی مدد لینا پڑتی ہے،صوبے کی کچھ جیلوں میں تو ڈاکٹر ز بھی تعینات نہیں ہیں ان جیلوں میں ڈاکٹرزکے بجائے کمپوڈر قیدیوں کا علاج کرتے ہیں۔

بلوچستان،جیلیں

مزید : پشاورصفحہ آخر