ثمرباغ‘ چوروں کا راج‘ ایک رات میں 12 دکانیں لوٹ لی گئیں

  ثمرباغ‘ چوروں کا راج‘ ایک رات میں 12 دکانیں لوٹ لی گئیں

  



جندول (نمائندہ پاکستان)سب ڈویژن جندول تھانہ ثمرباغ کے حدود میں ایک مرتبہ پھر چوروں نے ایک ہی شب میں بارہ دکانات لوٹ لئے۔علاقہ میں شدید خوف و ہراس۔تفصیلات کے مطابق گذشتہ ایک ماہ سے تحصیل ثمرباغ میں امن و امان کا صورت حال شدید خراب ہے۔اس حوالہ سے میڈیاں سے گفتگو کرتے ہوئے سماجی کارکن و رہنماء تاجربرادری سلیم خان کا کہنا تھا کہگذشتہ ایک ماہ کے دوران علاقہ میں امن و امان کا صورت حال بہت زیادہ خراب ہو چکاہے ان کا کہنا تھا کہ کچھ روز پہلے چوری کے مسلسل بیس سے زیادہ واقعات ہوئے جن میں لوگوں کو لاکھوں روپے سے محروم کیا گیا تھا جس پر تاجر برادری نے احتجاج کیا تھا ان کا کہنا تھا کہ اس حوالہ سے انہوں نے پولیس کو مجرمان پکڑنے کیلئے دو ہفتوں کا ڈیڈ لائن دیا تھا مگر بجائے چوروں کے پکڑے جانے کے گذشتہ ایک ہی شب میں دوبارہ چوروں نے گاوں نو کوٹو میں نو عدد دکانات سے لاکھوں روپے کا مال اور نقدی لوٹ لئے اسی روز مین بازار بنگلہ مارکیٹ ثمرباغ میں ابراھیم چائے ڈیلر کے دکان سے لاکھوں روپے کا چائے چوری کیا گیااور گاوں رحیم آباد میں عباد الرحمن کا میڈیکل سٹور اور ایک اور جنرل سٹور سے سودا سلف و نقدی لوٹ لئے گئیں۔ سلیم خان کا کہنا تھا کہ چوری کے مسلسل وارداتوں کی وجہ سے علاقہ کے لوگ شدید خوف و ہراس کا شکار ہیں،انہوں نے کہا کہ لوگوں کو دکانات سمیت گھروں کے حفاظت کی فکر لاحق ہیں۔انہوں نے کہا کہ علاقہ میں چوری کے مسلسل وارداتوں کے باوجود پولیس ملزمان کو پکڑنے میں ناکام ہیں۔انہوں نے کہا کہ دیر لوئر خیبرپختونخواہ کا حصہ ہے اس لئے حکومت اور خصوصی طور پر انسپکٹر جنرل آف پولیس ان باتوں کا نوٹس لیں اور فوری طور پر اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دیکر چوروں کو پکڑنے کیلئے اقدامات کریں تاہم اگر یہ کام پولیس کے بس میں نہیں تو عوام کو بتا دیں ہم خود بندوق اٹھا کر اپنے اور اپنے کاروباری مراکز کی خود حفاظت کریں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر