وفاقی دارالحکومت کے ماسٹر پلان میں ترامیم کی حتمی تجاویز تیار

  وفاقی دارالحکومت کے ماسٹر پلان میں ترامیم کی حتمی تجاویز تیار

  



اسلام آباد (آن لائن)وزیر اعظم عمران خان کی سربراہی میں کام کرنیوالی کمیٹی نے ساٹھ سال کے طویل وقفے کے بعد وفاقی دارالحکومت کے ماسٹر پلان میں ترامیم کی حتمی تجاویز تیار کر لی ہیں، آئندہ بیس سال کیلئے ماسٹر پلان میں کی جانے والی ترامیم کی تجاویز کی حتمی منظوری وفاقی کابینہ دے گی. نئے ماسٹر پلان کے تحت سیکٹر جی سکس کی تعمیر نو کرتے ہوئے کمرشل ایریاکو 97کنال سے بڑھا کر 517کنال، پارک ایریا کیلئے مختص29کنال سے بڑھا کر 82کنال،پبلک عمارتوں اور کمیونٹی ایریا کو 556سے بڑھا کر 700کنال کرنے، موجودہ رہائشی علاقے میں 1297کنال پر 16515نئے اپارٹمنٹس بنانے کی تجویز دی گئی ہے۔ مجوزہ تجاویز 36 صفحات پر مشتمل ہیں۔دستیاب دستاویز کے مطابق تجویز کردہ ماسٹرپلان آئندہ 20سال تک قابل عمل رہے گا اور 2040میں اس کا ازسر نو جائزہ لیاجائے گا۔نئے ماسٹر پلان میں کلین اینڈ گرین تاثر کو بڑھانے کیلئے اقدامات کرنے،دیہی علاقوں کیلئے نئے اقدامات اٹھانا،قدرتی ندی نالوں میں براہ راست سیوریج کی ممانعت،پانی کے ذخائر میں اضافہ،صفائی کے نظام میں مذید بہتری، غیر قانونی عمارتوں کو قانونی حیثیت دلوانے کیلئے بھی ٹی اوآرز طے کئے گئے ہیں،راول ڈیم کے ندی نالوں اور دریا کورنگ میں داخل ہونے والے سیوریج اور آلودہ پانی کی جانچ پڑتال اور اسکے حل کیلئے تجاویز،بلڈنگ بائی لاز میں تبدیلی،نجی ہاؤ سنگ سوسائٹیوں میں ڈویلپمنٹ کے طریقہ کارکو تبدیل کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہیں۔

ماسٹر پلان

مزید : صفحہ اول