پراجیکٹ کی تکمیل کے باوجود بجلی صارفین نیلم جہلم سر چارج کی ادائیگی پر مجبور

پراجیکٹ کی تکمیل کے باوجود بجلی صارفین نیلم جہلم سر چارج کی ادائیگی پر مجبور

  



ملتان (سٹاف رپورٹر ) نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی تکمیل کے باوجود بجلی صارفین این جے سر چارج کی ادائیگی پر مجبور ہیں۔ 969 میگا واٹ بجلی کا پیداواری منصوبہ مسلم لیگ ( ن) کی حکومت کے دور میں مکمل ہوگیا تھا اور اس کے کمرشل آپریشن کا آغاز ہوگیا تھا تاہم بجلی صارفین 10 پیسے فی یونٹ سرچارج کی ادائیگی کررہے ہیں۔ وزارت توانائی نے 30 جون 2018ء کے بعد این جے سرچارج کی وصولی بند کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن تقریباً ڈیڑھ سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود بجلی کے صارفین (بقیہ نمبر53صفحہ12پر)

سے وصولی جاری ہے اور اس وصولی کے خاتمے کی کوئی نئی تاریخ بھی نہیں  دی جارہی ہے۔ ذرائع کے مطابق حکومت این جے سرچارج کی مد میں صارفین سے ماہانہ 5 سے 7 ارب روپے وصول کررہی ہے۔ جبکہ پراجیکٹ کی تکمیل آپریشن کے آغاز پر ایسے سرچارج کی وصولی بند کردی جاتی ہے۔

مجبور

مزید : ملتان صفحہ آخر