بہاولپور:تحصیل یزمان کے ریگستان سے 2 بھارتی شہری گرفتار

بہاولپور:تحصیل یزمان کے ریگستان سے 2 بھارتی شہری گرفتار
بہاولپور:تحصیل یزمان کے ریگستان سے 2 بھارتی شہری گرفتار

  



بہاولپور(ڈیلی پاکستان آن لائن)بہاولپور کی تحصیل یزمان کے ریگستان سے 2 بھارتی باشندوں کو گرفتار کرلیا گیا، دونوں بھارتی باشندے بغیرپاسپورٹ پاکستان داخل ہوئے۔

نجی ٹی وی کے مطابق بہاولپور کی تحصیل یزمان کے ریگستان سے 2 بھارتی باشندوں کو گرفتار کرلیا گیا،بھارتی باشنوں کی پرشانت اوروری لال کے نام سے شناخت ہوئی،کنٹرول آف انٹری ایکٹ کے تحت دونوں کیخلاف مقدمہ درج کرلیا گیا،پرشانت کا تعلق بھارتی ریاست حیدر آباد جبکہ وری لال کا تعلق مدھیہ پردیش سے ہے۔ایف آئی ار کے مطابق دونوں بھارتی شہری بغیرپاسپورٹ پاکستان داخل ہوئے۔

یادرہے کہ ایک بھارتی جاسوس پاکستان کی تحویل میں ہے جسے سزائے موت سنائی جاچکی ہے ، مارچ 2016 میں کلبھوشن یادیو، بھارتی خفیہ ایجنسی ریسرچ اینڈ اینالسز ونگ (را) کا جاسوس حسین مبارک پٹیل کے جعلی نام سے کام کرتا تھا جس بلوچستان کے علاقے ماشکیل سے پاکستان میں جاسوسی اور تخریب کاری میں ملوث ہونے پر ایک آپریشن کے دوران گرفتار کیا گیا۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری ایک بیان میں کلبھوشن یادیو نے بتایا کہ وہ بھارتی بحریہ کا حاضر سروس افسر ہے تاہم بھارتی دارالحکومت سے اسی روز ایک بیان جاری کیا گیا جس میں کہا گیا تھا کہ کلبھوشنسابق نیوی افسر ہے۔

کلبھوشن یادیو کا کورٹ مارشل کیا گیا اور فوجی عدالت نے اسے جاسوسی کے الزام میں سزائے موت سنائی جبکہ بھارت نے فیلڈ جنرل کورٹ مارشل کے ذریعے سزائے موت سنائے جانے کو ’سوچا سمجھا قتل‘ قرار دیا۔لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے فوجی عدالت کے فیصلے کے خلاف کلبھوشن یادیو کی اپیل کی پیروی کرنے حوالے سے وکلا کو خبردار کیا۔بار ایسوسی ایشن کے سیکریٹری عامر سعید نے کہا کہ وکلا کلبھوشن کو رہا کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ’جو پاکستان کے معصوم شہریوں کی جانوں سے کھیلنے کا مرتکب پایا گیا‘۔

بھارت نے پاکستان کے فیصلے کے خلاف عالمی عدالت انصاف سے رجوع کیا اور کلبھوشن یادیو کیس میں ویانا کنونشن کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا۔جس پر عالمی عدالت انصاف نے پاکستان میں کلبھوشن کی سزائے موت پر ’عدالت کی جانب سے حتمی فیصلہ سنائے جانے تک‘ عمدرآمد روک دیا۔علاوہ ازیں عالمی عدالت نے اس پاکستانی موقف کو بھی مسترد کردیا تھا کہ آئی سی جے اس معاملے میں مداخلت کا اختیار نہیں رکھتی اور اس کی وجہ یہ بتائی کہ چونکہ اس کیس میں ویانا کنوینش کی خلاف ورزی کا الزام شامل ہے جسے پاکستان اور بھارت دونوں تسلیم کرتے ہیں لہٰذا وہ اس کیس کی سماعت کرسکتے ہیں۔

کلبھوشن یادیو کا دوسرا اعترافی بیان جاری کیا گیا جس میں اس نے کالعدم بلوچ لبریشن آرمی اور بلوچ ریپبلک آرمی کے ساتھ مل کر بلوچستان میں تخریب کار سرگرمیاں کرنے کا اعتراف کیا اس کے ساتھ سزائے موت پر آرمی چیف سے رحم کی اپیل بھی کی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /بہاول پور