کشمیری خواتین سے متعلق گھٹیابیان،بھارتی فوجی بی جے پی کے کارندے بن چکے،فردوس عاشق اعوان

کشمیری خواتین سے متعلق گھٹیابیان،بھارتی فوجی بی جے پی کے کارندے بن ...
کشمیری خواتین سے متعلق گھٹیابیان،بھارتی فوجی بی جے پی کے کارندے بن چکے،فردوس عاشق اعوان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم پاکستان عمران خان کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان بھارت کے ریٹائرڈ جنرل کی کشمیری خواتین سے متعلق نازیبا زبان کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے آئینہ دکھا دیاہے۔

اپنے سلسلہ وار ٹویٹس میں فردوس عاشق نے کہا کہ بھارتی ریٹائرڈ جنرل کی ٹی وی پر کشمیری خواتین کے ریپ کی حمایت کے گھٹیا بیان کی شدید مذمت کرتے ہیں۔اخلاق سے عاری اور فسطائیت سے بھرپوریہ سوچ مودی کے نازی ازم کا ناقابل تردید ثبوت ہے۔

معاون خصوصی نے کہا بھارتی فوجی بی جے پی کے کارندے بن چکے ہیں۔عالمی برادری بھارتی فوج کے ایسے ذہنی بیماروں اور انسانیت کے مجرموں کے خلاف سخت درعمل کا اظہار کرے۔

انہوں نے کہاایسے بیانات قاتل اورغاصب مودی حکومت کے ان دعووں کی کھلی تردیدہیں کہ کشمیر میں زندگی معمول پرآگئی ہے۔سلام پیش کرتے ہیں اپنی کشمیری ماوں اوربہنوں کوجنہوں نے جرات، شجاعت اوربہادری سے بھارتی جبر و ظلم کا مقابلہ کیا۔جدوجہدآزادی میں ان کی قربانیاں اورخدمات تاریخ کاناقابل فراموش باب ہیں۔

دوسری جانب صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے بھی اس اقدام کی شدید مذمت کی مذکورہ پروگرام کی ویڈیو منسلک کرکے ٹوئٹر پر لکھا کہ بھارتی جنرل کاکشمیری خواتین کی عصمت دری کابیان شرمناک ہے، سابق بھارتی جنرل ایس پی سنہابی جےپی کاکارکن ہے۔

فردوس کے بیان پر ٹویٹر صارفین نے اپنا ردعمل دیتے ہوئے جہاں بھارتی بربریت کی مذمت کی وہیں حکومت کو مزید اقدامات کرنے کا بھی مشورہ دیاہے

شہریارنامی صارف نے لکھا کہ ہاں بس ہم نے مذمت ہی کرنی ہے۔میڈم یہ لوگ مذمت سے نہیں مرمت سے سیدھے ہونگے۔جہاد کا اعلان کریں کشمیر میں فوج اتاریں۔ان کو لگ پتہ جائے۔

ایک اور صارف نے سوال اٹھایاکہ ”دنیا کے طاقتور ملک کشمیر کے معاملے میں چپ کیوں ہیں فقط پاکستان کے ساتھ چند مسلم ممالک ہی بات کرتے ہیں باقی سارے ممالک چپ ہیں کیا وجہ ہے“

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی ٹی وی شو میں بحث کے دوران انتہا پسند سوچ رکھنے والے بھارتی فوج کے سابق جنرل ایس پی سنہا نے شرمناک حد تک بے حسی کا مظاہرہ کیا۔ڈبیٹ پینل میں شامل ایس پی سنہا جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور خواتین کی موجودگی میں چیخ چیخ کر کشمیری خواتین سے زیادتی کی حمایت کرتے رہے۔حتیٰ کہ وہاں موجود شرکاءنے بھی سابق بھارتی جنرل کی اس شرمناک باتوں پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ان کی شدید مخالفت اور مذمت کی۔

پروگرام کی اینکر اور پینل میں شامل دیگر ارکان نے ایس پی سنہا کو آڑے ہاتھوں لیا اور اپنے غصے کا اظہار کرتےہوئے کہا کہ وہ اس طرح کی انسانیت سوز باتیں کرنے کی اجازت نہیں دے سکتے۔

سوشل میڈیاپرسابق بھارتی جنرل کے بیان کی دنیا بھر میں شدیدمذمت کی جارہی ہے اور لوگ اپنے غصے اور ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ایس پی سنہا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کررہے ہیں۔سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ خواتین سے متعلق اس طرح کے گھناو¿نے عمل کی ترغیب دینے والے شخص پر مکمل پابندی عائد کی جانی چاہیے۔

مزید : اہم خبریں /قومی