کندھ کوٹ:کتوں کے حملے میں بارہ افراد زخمی

کندھ کوٹ:کتوں کے حملے میں بارہ افراد زخمی
کندھ کوٹ:کتوں کے حملے میں بارہ افراد زخمی

  



کندھ کوٹ(ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ میں کتے انسانوں کیلئے وبال جان بننے لگے۔ کندھ کوٹ میں کتوں نے بارہ افراد کو کاٹ لیا۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق سندھ کے شہر کندھ کوٹ کے علاقہ تنگوانی میں بارہ افراد کو کتوں نے کاٹ لیا جس پر انہیں طبی امداد فراہم کرنے کیلئے مقامی ہسپتال پہنچادیاگیاہے۔

یاد رہے پاکستان خصوصا سندھ میں کتوں کے کاٹے کے آئے روز واقعات پیش آتے رہتے ہیں جبکہ ہسپتالوں میں حفاظتی ویکسین نہ ہونے پر متعدد افراد خصوصا بچے لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

حال ہی میں لاڑکانہ کے چھ سالہ پھول سے بچے حسنین کوکتوں نے نوچ ڈالا جس کے باعث وہ ہسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج ہے۔ حسنین کا علاج کرنے والے میڈیکل بورڈ نے کہا ہے کہ بچے کی زندگی کے لیے 48گھنٹے اہم ہیں۔بچے کو گہرے اور بہت زیادہ زخم آئے ہیں۔حالت ابھی بھی خطرے سے باہر نہیں ہے۔مزید کتنی سرجری کرنی پڑیں گی یہ صورتحال دیکھ کر فیصلہ کریں گے۔

قومی ادارہ صحت برائے اطفال میں بد ترین سگ گزیدگی کا شکار زیر علاج حسنین کا میڈیکل بورڈ نے معائنہ کیا۔این آئی سی ایچ کے سربراہ ڈاکٹر جمال رضا اور چائلڈ سرجن ڈاکٹر محمد انور نے صحافیوں کو بتایا کہ بچے کے جبڑے کی سرجری کا پہلا آپریشن مکمل کیا لیکن اس کی حالت ابھی بھی خطرے سے باہر نہیں ہے۔حسنین کو وینٹی لیٹر پر رکھا ہوا ہے۔ اگلے اڑتالیس گھنٹے اہم ہیں۔انھوں نے کہا کہ بچے کو صحتیاب کرنا پہلی ترجیح ہے۔ پھر مزید سرجری کی جائیں گی۔

ان کا کہنا ہے کہ حسنین کی صحت ابھی بھی تشویشناک ہے۔انفیکشن کی صورت حال کا سامنا ہے۔ بہت زیادہ اور گہرے زخم آئے ہیں۔

سر کے پچھلے حصے کا گوشت اور ناک مکمل غائب ہے۔پورے جسم پر کتے کے کاٹنے کے نشانات ہیں اور بچے کا معائنہ جار ی ہے۔ یہ سرجری عام سرجری سے بالکل مختلف ہے۔جیسے جیسے ٹشو بہتر ہوں گے مزید سرجری کی جائیں گی۔ پہلی ترجیح بچے کی صحت میں بہتری لانا ہے ۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی