پرنسپل سیکرٹری محمد خان بھٹی کو جواب داخل کرانے کیلئے دوبارہ نوٹس جاری

پرنسپل سیکرٹری محمد خان بھٹی کو جواب داخل کرانے کیلئے دوبارہ نوٹس جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
 لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس مزمل اخترشبیر نے پرنسپل سیکرٹری وزیر اعلی محمد خان بھٹی کی تعیناتی کے خلاف دائردرخواست پرپرنسپل سیکرٹری محمد خان بھٹی کو جواب داخل کرانے کیلئے دوبارہ نوٹس جاری کردیئے سماعت شروع ہوئی تو عدالت نے برہمی کااظہارکرتے ہوئے کہاکہ محمد خان بھٹی کی طرف سے جواب داخل کیوں نہیں کرایا؟جونیئر وکیل نے عدالت کوبتایا کہ عثمان عارف ایڈووکیٹ دوسری عدالت میں مصروف ہیں، آئندہ سماعت پر جواب داخل کرا دیں گے، درخواست گزار اختر علی کی طرف سے میاں داؤد ایڈووکیٹ نے موقف اختیارکیا کہ اس کیس میں تاخیری حربے استعمال کئے جا رہے ہیں، آخری تاریخ پر عدالت نے پرنسپل سیکرٹری محمد خان بھٹی کو جواب جمع کرانے کا پابند کیا تھا، ڈیڑھ مہینے بعد بھی جواب جمع نہ کروانے کا مطلب ہے کہ کیس کو دانستہ لٹکایا جائے، سادہ سا قانونی نکتہ ہے کہ ایک کیڈر کا افسر دوسرے کیڈر میں ڈیپوٹیشن پر تعینات نہیں ہو سکتا، اس ایک تعیناتی کی وجہ سے پورے پنجاب کی بیوروکریسی دباؤ کا شکار ہے، پرنسپل سیکرٹری برائے وزیر اعلی پنجاب کی تعیناتی آئین و قانون کیخلاف ہے، محمد خان بھٹی کی بطور پرنسپل سیکرٹری تعیناتی کے دو نوٹیفکیشن جاری کئے گئے، ٹرانسفر پوسٹنگ کا پہلا سادہ نوٹیفکیشن، دوسرا نوٹیفکیشن ڈیپوٹیشن پر تعیناتی کا کیا گیا، دونوں نوٹیفکیشن چودھری پرویز الہی کے بطور وزیر اعلی پنجاب حلف اٹھانے سے پہلے ہی جاری کئے گئے، قانون کے مطابق ڈیپوٹیشن پر بھی ایک سروس کیڈر بدل کر دوسرے سروس کیڈر میں تعیناتی پر پابندی ہے، سپریم کورٹ ڈیپوٹیشن پر ایک کیڈر کے افسر کی دوسرے کیڈر میں تعیناتی کے غیرآئینی ہونے کا اصول طے کر چکی ہے، عدالت سے استدعاہے کہ پرنسپل سیکرٹری برائے وزیر اعلی پنجاب محمد خان بھٹی کی تعیناتی کوکالعدم قرار دیاجائے۔
نوٹس جاری 

مزید :

صفحہ آخر -