میو ہسپتال اور کالج آف آفتھلمالوجی کی نابینا پن پر آگاہی تقریب

میو ہسپتال اور کالج آف آفتھلمالوجی کی نابینا پن پر آگاہی تقریب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(سٹی رپورٹر)میو ہسپتال اور کالج آف آفتھلمالوجی اینڈ الائیڈویژن سائنسز کے اشتراک سے ذیابیطس کا عالمی دن کے حوالے سے شوگر سے ہونے والے نابینا پن پر آگاہی تقریب کا انعقاد کیاگیا۔ پروگرام میں ماہرین نے ذیابیطس اور اس سے ہونے والے نابینا پن پر آگاہی دی۔ نابینا پن سے بچاؤ کیلئے شکر کی مقدار کو کنٹرول رکھیں اور ڈاکٹر کی تجویز کی گئی ادویات کا باقاعدہ استعمال کریں۔ ماہرین کی رائے ہے کہ شوگر کے مریض سال میں دو بار اپنی آنکھوں کا قطرے ڈال کر اور پتلی پھیلا کر مکمل معائنہ ضرور کروائیں۔ شوگر کے آنکھوں پر پردے پر اثرات سے بذریعہ انجیکشن یا لیزر بینائی کو بچایا جا سکتا ہے۔ جلد تشخیص اور بروقت علاج نہ ہونے کی صورت میں مکمل بینائی جانے کا خطرہ ہو سکتا ہے۔ذیابیطس سے عینک کا نمبر تبدیل ہوتا رہتا ہے۔ آنکھوں کی انفیکشن بار بار ہو سکتی ہے۔ ماہرین میں پروفیسر زاہد کمال صدیقی، پرنسپل، کالج آف آفتھلمالوجی، پروفیسر اسد اسلم خان، نیشنل کوارڈنیٹر، پریونیشن اینڈ کنٹرول آف بلائنڈنس پاکستان، پروفیسر محمد انیس، نیفرالوجی، کنگ ایڈورڈمیڈیکل یونیورسٹی، ڈاکٹر عظمی ملک، ایسوسی ایٹ پروفیسر، میڈیسن، کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی، ڈاکٹر صائمہ خالد اور ڈاکٹر آمنہ زمان، آئی کئیر پروفیشنل میو ہسپتال لاہور شامل ہیں۔