قبائلی مشران کے ٹارگٹ کلنگ کا واقعہ، محسود قبائل کا احتجاجی مظاہرہ

قبائلی مشران کے ٹارگٹ کلنگ کا واقعہ، محسود قبائل کا احتجاجی مظاہرہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان: ہزاروں افراد کا محسود قبائل سے تعلق رکھنے والے تین قبائلی مشران کے ٹارگٹ کلنگ واقعے پر آحتجاجی مظاہرے، تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے شہید ہونے والے محسود قبائل کے مشران ملک دوست، ملک غوٹ اور ملک نور محمد کی نماز جنازہ ٹاون ہال گراونڈ میں آدا کرنے کے بعد ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے مذکورہ واقعے کے خلاف آحتجاجی مظاہرہ کیا، احتجاجی مظاہرے کے دوران حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی، مظاہرین کا کہنا تھا کہ گزشتہ آٹھارہ سالوں سے محسود قبائل کے مشران کی ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ جاری ہے جسمیں ہزاروں کی تعداد میں محب وطن لوگوں کو شہید کردیا گیا اور لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے اپنے گھر بار اور کاروبار چھوڑ کر ہجرت کرکے اندرون ملک منتقل ہوگئے لیکن اس کے باوجود کسی کو محسود قبائل کے حالت زار پر رحم نہیں آیا، ان کا کہنا تھا کہ قبائلی عوام کو مولی اور گاجر کی مانند کاٹا جا رہا ہے اور یہ ہمیں نہیں معلوم کہ کس جرم کی سزا ہمیں دی جا رہی ہے، مقررین نے اعلی حکومتی حکام سے علاقے میں امن و امان قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔