حکومت پنجاب نے متنازعہ فلم "جوائے لینڈ " کی نمائش پر پابندی لگا دی

حکومت پنجاب نے متنازعہ فلم "جوائے لینڈ " کی نمائش پر پابندی لگا دی
حکومت پنجاب نے متنازعہ فلم
سورس: @instagram/khoosatfilmsofficial

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)  پنجاب حکومت نے متنازعہ فلم "جوائے لینڈ" کی صوبے بھر  میں نمائش پر پابندی لگا دی۔ 

محکمہ اطلاعات پنجاب کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق فلم "جوائے لینڈ " کی نمائش پر پابندی مختلف حلقوں کی جانب سے سامنے آنے والی مسلسل شکایات کے پیش نظر لگائی گئی ہے۔جاری نوٹیفیکیشن میں  فلم کے پرڈیوسر سرمد سلطان کو ہدایت جاری کی گئی ہیں کہ وہ اپنی فلم "جوائے لینڈ" کی نمائش پنجاب میں نہیں کرسکتے ۔محکمہ اطلاعات کے بیان کے مطابق فلم کے حوالے سے بے حد شکایات موصول ہورہی ہیں، اسی لیے پابندی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
و اضح رہے کہ گزشتہ روز ہی  پاکستان کے سینسر بورڈ نے وزیراعظم کی ہدایت پر جائزہ لینے کے بعد  فلم جوائے لینڈ کے قابل اعتراض ایک سے دو منٹ تک کے بعض حصے حذف کرنے کے بعد ملک بھر میں نمائش کی اجازت دے دی تھی۔

خیال رہے کہ مذکورہ فلم کی کہانی ایک نوجوان اور ٹرانس جینڈر کے گرد گھومتی ہے جو کہ ڈانس کلب میں ملازمت کے دوران ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہو جاتے ہیں۔ہدایت کار صائم صادق کی اس فلم کی کاسٹ میں سرمد کھوسٹ، ثروت گیلانی، علینا خان، سہیل سمیر، سلمان پیر، ثانیہ سعید، کنول کھوسٹ، زویا احسن، ثنا جعفری اور قاسم عباس سمیت دیگر اداکار شامل ہیں جبکہ فلم کا میوزک عبداللّٰہ صدیقی کی جانب سے پیش کیا گیا ہے۔سرمد کھوسٹ اور اپوروا چرن کی پروڈیوس کردہ فلم آج  ملک کے دیگر حصوں میں ریلیز کی جائے گی۔

مزید :

تفریح -