روشن مستقبل کی زندہ علامت

روشن مستقبل کی زندہ علامت
روشن مستقبل کی زندہ علامت

  

نیلسن منڈیلا نے الیکشن کے لئے سوچنے والے کو سیاستدان اور آئندہ نسل کے لئے سوچنے والے کو لیڈر قرار دیا۔ اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے پاکستانی قوم خوش نصیب ہے جسے مستقبل کے لئے سوچنے والے لیڈر نصیب ہوئے۔ لوڈشیڈنگ کے اندھیروں کو روشنی میں بدلنے کے لئے اپنا دن رات ایک کرنے والے بلاشبہ اس قوم کے لیڈر ہیں۔ حکومت پاکستان اور حکومت پنجاب نے اپنے وسائل اور صلاحیت کے مطابق اقتدار سنبھالتے ہی توانائی بحران کے خاتمے ‘ مستقبل کی ضرورتوں کے مطابق کئی منصوبے شروع کئے۔ صوبہ پنجاب میں لوڈسینٹر کے نزدیک گیس سے چلنے والے تین پاور پلانٹس لگائے جائیں گے۔ بھکی پاور پلانٹ‘ حویلی بہادر شاہ جھنگ پاورپلانٹ اور بلوکی پاور پلانٹ کی استعدادکار 3600میگاواٹ ہے۔ اسی طرح بہاولپور میں ہزاروں ایکڑ رقبے پر قائد اعظمؒ سولر پارک سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی حاصل کرنے کا منصوبہ ہے۔ جبکہ حکومت پنجاب پانچ برس کے دوران صوبہ میں کوئلے کے ذریعے 6000میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر عمل درآمد کے لئے کوشاں ہیں جن پر 8سے 10لاکھ ڈالرز سرمایہ کاری ہو رہی ہے۔ حکومت پاکستان اور حکومت چین کے درمیان 46ارب ڈالرز کے تاریخی پیکج میں توانائی کے کئی پراجیکٹ بھی شامل ہیں۔

بھکی پاور پلانٹ جس کا افتتاح گزشتہ ہفتے کیا گیا‘ توانائی بحران کے خاتمے اور بجلی کی پیداوار کے حصول کے لئے نئے رحجانات کا حامل ہے۔ اسی نوعیت کے دوسرے پاور پلانٹس حویلی بہادرشاہ میں لگائے جا رہے ہیں۔ قابل ذکر امر یہ ہے کہ گیس سے چلنے والے یہ پاورپلانٹس ماضی کی نسبت نہ صرف لاگت کے اعتبار سے ارزاں ہیں بلکہ ان کی استعدادکار بھی تمام ایل این جی پاور پلانٹس سے زیادہ ہے۔ بھکی پاور پلانٹ کی تعمیر سے 38ارب اور حویلی پاور پلانٹ کے تعمیراتی اخراجات میں 37ارب کی بچت متوقع ہے، جبکہ ساڑھے چھ ارب ایندھن کی سالانہ بچت بھی ہو گی اور یہ حکومت کی شفاف پالیسیوں کا واضح ثبوت ہے کہ عالمی سطح کی کمپنیوں نے شفافیت کا یقین کرتے ہوئے انتہائی کم قیمت کی آفر پیش کی۔ روشنی کا سفر جاری ہے۔ پاکستانی قوم اور سیاستدانوں کو اس امر میں حکومت کا ہاتھ بٹانا چاہیے۔ کیونکہ یہ پاور پلانٹس پاکستان کے لئے ایک روشن مستقبل کی زندہ علامت ہیں۔ بجلی کے بحران کے خاتمے کے لئے گیس‘ تیل‘ سولر اور ہائیڈل سمیت تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لا کر ہر ممکن اقدام پاکستانی قیادت کے اخلاص کا بھرپور ثبوت ہے۔وزیراعظم پاکستان محمد نوازشریف اور وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے جھنگ کے علاقے حویلی بہادر شاہ میں گیس سے چلنے والے 1230میگاواٹ کے پاور پلانٹ کا سنگ بنیاد رکھاہے۔ گورنر پنجاب رفیق رجوانہ ، وزیر مملکت عابدشیر علی، پاکستان میں چین کے سفیر سن ویڈانگ ، صوبائی وزراء، اراکین قومی و صوبائی اسمبلی ، دانشوروں، کالم نگاروں کے علاوہ ماہرین توانائی اور لوگوں کی بڑی تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے حویلی بہادر شاہ گیس پاور پلانٹ کے سنگ بنیاد کی تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ پچھلے سوا 2برس میں وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں توانائی کے منصوبوں پر ہونے والی محنت رنگ لا رہی ہے۔مُلک کی تاریخ میں اربوں ڈالر کی لاگت کے منصوبوں کی اتنی شفافیت اور تیز رفتاری سے تکمیل کی کوئی مثال نہیں ملتی اور اس بات کا سہرا وزیراعظم محمد نوازشریف اور ان کی ٹیم کے سر ہے، جن کی شبانہ روز محنت سے یہ کامیابیاں مل رہی ہیں۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے نیپرا کے ٹیرف کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ نیپرا نے سولر کا ٹیرف 16.2 سینٹ فی یونٹ دیاتھا، لیکن آج تک اس نرخ پر پاکستان میں ایک کلو واٹ بجلی بھی پیدا نہیں ہو سکی۔ پنجاب حکومت نے قائداعظم سولر پارک بہاولپور میں 100میگا واٹ کا سولر پاور پلانٹ انتہائی شفاف طریقے سے مکمل کیاہے اور ہم نے 14 سینٹ فی یونٹ کا نرخ حاصل کیا ،جس پر پنجاب حکومت کے اس ریٹ کو دیکھتے ہوئے نیپرا کو بھی مجبوراً سولر کا ریٹ14.1سینٹ فی یونٹ مقر رکرنا پڑا ہے۔ وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں جو منصوبے لگ رہے ہیں ان کی شفافیت کی نہ صرف پاکستان بلکہ پورے مشرق وسطیٰ میں گونج ہے۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے تینوں گیس پاور پلانٹس میں 110ارب روپے کی بچت کا خصوصیت سے ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی تاریخ کا وہ کون سا دور تھا کہ کسی حکومت نے 110ارب روپے تو دور کی بات 110روپے بھی بچائے ہوں ۔ حکومت نے ایک معیار (بینچ مارک) مقرر کر دیاہے اورآئندہ آنے والی حکومتیں اگر اچھی ہوں گی تو ایسے منصوبے لگتے رہیں گے۔مَیں دوست مُلک چین کے صدر ، وزیراعظم ،چینی قیادت ، عوام اور چین کے سفیر کا بھی شکر گزار ہوں کہ جو توانائی بحران کے خاتمے میں پاکستان کا ساتھ نبھا رہے ہیں۔

چیف ایگزیکٹو آفیسر حویلی بہادر شاہ پاور پلانٹ راشد محمود لنگڑیال نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حویلی بہادر شاہ پاور پلانٹ سے گیس کی بنیاد پر 1230میگا واٹ بجلی پید اہوگی اور یہ پلانٹ کم ایندھن استعمال کر کے زیادہ بجلی پیدا کرے گااو راس کا شمار دُنیا کے بہترین پاور پلانٹس میں ہو گا ۔ایندھن کی مد میں سالانہ 18ارب روپے کی بچت ہو گی، جبکہ منصوبے کی تعمیر میں 37ارب روپے کی بچت ہو گی۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی ذاتی دلچسپی، محنت اور کاوشوں کی بدولت گیس کی بنیاد پر لگنے والے بجلی کے ان منصوبوں میں 110ارب روپے کی بچت ہو ئی ہے اور پاور پلانٹ میں جدید ٹیکنالوجی استعمال کی جا رہی ہے اوریہ منصوبہ 2017ء میں مکمل ہوگا ۔صدرجنرل الیکٹراک کمپنی صارم شیخ نے کہاکہ تقریب میں شرکت میرے لئے باعث اعزاز ہے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف اور ان کی پوری ٹیم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، جنہوں نے یہ بڑی کامیابی حاصل کی ہے۔ جنرل الیکٹراک کمپنی پاکستان کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کررہی ہے اور ہماری کمپنی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ہم نے یہاں جدید ٹیکنالوجیز متعارف کرائی ہیں ۔حویلی بہادر شاہ میں لگنے والے پاور پلانٹس سے 40لاکھ گھروں کو سستی بجلی میسر آئے گی اور ہم اس منصوبے کو مقررہ وقت میں مکمل کرنے کے لئے کوئی کسر اُٹھا نہیں رکھیں گے ۔ چیئرمین پاور چائنہ کمپنی ہون ہاؤ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چین اور پاکستان کے مابین اقتصادی تعاون بڑھ رہاہے اور چین پاکستان کی معاشی ترقی میں اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔ چین پاکستان میں بجلی کی کمی کا مسئلہ حل کرنے میں بھرپو رتعاون کرے گا ۔حویلی بہادر شاہ گیس پاور پلانٹ 2017ء میں مکمل ہوگا اور یہ منصوبہ مقامی آبادی کی معاشی حالت بہتر بنانے میں بھی معاون ثابت ہوگا ۔ہم منصوبے کو اپنے پارٹنر سے مل کر مقررہ مدت میں مکمل کرنے کے لئے اپنی تمام تر توانائیاں بروئے کار لائیں گے۔

مزید :

کالم -